Advertisement

پاکستان کے اہم شہر میں باپ کا اپنی 20سالہ بیٹی سے زیادتی کا مقدمہ

Advertisements

 لاہور میں بیٹی سے مبینہ زیادتی کرنے والے شخص کو مقدمے سے بری کر دیا گیا ہے۔ صنفی تشدد کی خصوصی عدالت نے بیٹی سے مبینہ زیادتی کے مقدمے میں ملوث ملزم باپ کو مدعی خاتون سے سمجھوتہ ہونے کی وجہ سے بری کر دیا۔ تفصیلات کے مطابق صنفی تشدد کی خصوصی عدالت کے جج ایڈیشنل سیشن جج رحمت علی نے فیصلہ سنایا۔متاثرہ لڑکی رابعہ نے عدالت میں بیان دیتے ہوئے کہا کہ اب میری شادی ہو گئی ہے

لہٰذا میں اب مزید اس کیس کی پیروی کرنا نہیں چاہتی۔ رابعہ کا کہنا تھا کہ میں نے ملزم کو اللہ کی رضا کی خاطر معاف کر دیا ہے اگر ملزم کو مقدمے سے بری کر دیا جائے تو مجھے کوئی اعتراض نہیں ہو گا۔ دوران سماعت ملزم دلاور نے بیان دیا کہ پسند کی شادی سے منع کرنے پر بیٹی نے مجھ پر زیادتی کا الزام عائد کیا تھا۔ جس کے بعد عدالت نے ملزم کو متاثرہ لڑکی کے بیان کی روشنی میں بری کرنے کا حکم دے دیا۔ یاد رہے کہ ملزم دلاور کے خلاف تھانہ جنوبی چھاؤنی پولیس نے اپنی 20 سالہ بیٹی سے زیادتی کرنے کے الزام میں مقدمہ درج کیا تھا۔

سینئر رہنما اور رکن اسمبلی کو تاحیات نا اہل قرار دے دیا گیا

اپنے اثاثے چھپانے پر الیکشن کمیشن آف پاکستان نے ایک اور رکن اسمبلی کو تاحیات نا اہل قرار دے دیا ۔ نااہل قرار دیے جانے والے رکن اسمبلی مسلم لیگ (ن) کے طارق محمود ہیں۔ تفصیلات کے مطابق پاکستان مسلم لیگ ن کے کو اپنے قائد نواز شریف اور دیگر کچھ رہنماوں کی نااہلی کے بعد ایک اور بڑا دھچکا لگا ہے۔الیکشن کمیشن آف پاکستان کی جانب سے سلم لیگ ن کے رہنما اور سابق رکن اسمبلی کو نااہل قرار دے دیا گیا ہے۔ الیکشن کمیشن نے سابق ایم پی اے میاں طارق محمود کا تاحیات نااہل کردیا ہے۔ چیف الیکشن کمیشن سردار محمد رضا نے سابق ایم پی اے میاں طارق محمود کو بیرون ملک اثاثے چھپانے پر غلط بیانی کی بنا پر تاحیات نااہل قرار دیدیا ہے اور اپنے ایم پی اے دور 2013 سے 2018 تک کی مراعات واپس کرنے کا حکم دے دیا ہے۔

واضح رہے کہ میاں طارق محمود 2013 کے جنرل الیکشن میں گجرات کے صوبائی حلقے پی پی 113 سے ن لیگ کے ٹکٹ پر 51586 ووٹ لے کر رکن پنجاب اسمبلی منتخب ہوئے۔ ان کے مد مقابل ق لیگ کے اعجاز احمد 34917 لے کر دوسرے نمبر پر رہے جبکہ پی ٹی آئی کے امیدوار چودھری شرافت حسین ایڈووکیٹ 16018 ووٹ حاصل کر سکے تھے۔ میاں طارق محمود جنرل الیکشن 2008 میں بھی اسی حلقے سے الیکشن لڑے تھے۔ 2008 کے الیکشن میں طارق محمود نے ق لیگ کے ٹکٹ پر الیکشن میں حصہ لیا تھا اور 34900 ووٹ لے کر رکن پنجاب اسمبلی منتخب ہوئے تھے۔

Advertisement

Source DailyAusaf
x

We use cookies to give you the best online experience. By agreeing you accept the use of cookies in accordance with our cookie policy.

I accept I decline Privacy Center Privacy Settings