Advertisement

خاتون کی کمر میں درد ڈاکٹر کے پاس گئی تو سٹی سکین کے اندر کمر کے نچلے حصے میں ایسی چیز پھنسی ہوئی نظر آ گئی کہ سب کے پیروں تلے زمین ہی نکل گئی ، کیا چیز تھی ؟ دیکھ کر آپ بھی ڈر جائیں گے

Advertisements

امریکہ میں ایک خاتون کو کئی سالوں سے کمر کا درد لاحق تھا۔ بالآخر وہ تنگ آ کر ڈاکٹرکے پاس گئی تو اسے ٹیسٹ کرنے کے بعد اس کی ریڑھ کی ہڈی میں ایسی چیز کی موجودگی کا انکشاف کر دیا کہ خاتون کے پیروں تلے سے زمین نکل گئی۔ میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق ڈاکٹر نے خاتون کی کمر کا سی ٹی سکین کرنے کے بعد بتایا کہ اس میں انجکشن کی سوئی کا ایک ٹکڑا موجود ہے جس کی وجہ سے اسے مسلسل درد لاحق ہے۔

جب اس حوالے سے تحقیق کی گئی تو معلوم ہوا کہ 41سالہ ایمی برائٹ نامی اس خاتون نے 2003ءمیں آپریشن کے ذریعے بچے کو جنم دیا تھا، تب ڈاکٹروں نے اس کی ریڑھ کی ہڈی میں نشے کا انجکشن لگایا تھا جس کی سوئی ٹوٹ گئی اور اس کا ایک حصہ اس کے جسم میں ہی رہ گیا۔ امریکی ریاست فلوریڈا کے شہر جیکسن وائل کی رہائشی خاتون کو ڈاکٹر نے بتایا کہ سوئی کے اتنا عرصہ ریڑھ کی ہڈی میں رہنے کے بعد اسے اتنا نقصان پہنچ چکا ہے کہ اب سوئی کو نکالنے کا بھی کوئی فائدہ نہیں ہو گا۔ اب سوئی نکال دی جائے یا اندر رہنے دی جائے دونوں صورت میں کچھ ہی عرصے بعد اس کا نچلا دھڑ مفلوج ہو جائے گا۔

اس اندوہناک خبر پردل گرفتہ ایمی برائٹ کا کہنا ہے کہ وہ اس ہسپتال کے خلاف مقدمہ دائر کرائے گی جہاں اس کا زچگی کا آپریشن ہوا تھا۔ بتایا گیا ہے کہ اس ہسپتال میں مریضوں کی کمر میں سوئی ٹوٹنے کے واقعات اکثر ہوتے رہتے ہیں۔ 2005ءسے اب تک ہسپتال کے خلاف 14مریض مقدمات درج کروا چکے ہیں جن کی ریڑھ کی ہڈی میں سوئیاں ٹوٹ گئی تھیں اور ہسپتال ان کو ہرجانے میں مجموعی طور پر ساڑھے 4اس اندوہناک خبر پردل گرفتہ ایمی برائٹ کا کہنا ہے کہ وہ اس ہسپتال کے خلاف مقدمہ دائر کرائے گی جہاں اس کا زچگی کا آپریشن ہوا تھا۔ بتایا گیا ہے کہ اس ہسپتال میں مریضوں کی کمر میں سوئی ٹوٹنے کے واقعات اکثر ہوتے رہتے ہیں۔ 2005ءسے اب تک ہسپتال کے خلاف 14مریض مقدمات درج کروا چکے ہیں جن کی ریڑھ کی ہڈی میں سوئیاں ٹوٹ گئی تھیں اور ہسپتال ان کو ہرجانے میں مجموعی طور پر ساڑھے 4کروڑ ڈالر(تقریباً5ارب روپے) کی خطیر رقم ادا کر چکا ہے اور ابھی کئی مقدمات زیرسماعت ہیں۔ کروڑ ڈالر(تقریباً5ارب روپے) کی خطیر رقم ادا کر چکا ہے اور ابھی کئی مقدمات زیرسماعت ہیں۔ اس اندوہناک خبر پردل گرفتہ ایمی برائٹ کا کہنا ہے کہ وہ اس ہسپتال کے خلاف مقدمہ دائر کرائے گی جہاں اس کا زچگی کا آپریشن ہوا تھا۔ بتایا گیا ہے کہ اس ہسپتال میں مریضوں کی کمر میں سوئی ٹوٹنے کے واقعات اکثر ہوتے رہتے ہیں۔ 2005ءسے اب تک ہسپتال کے خلاف 14مریض مقدمات درج کروا چکے ہیں جن کی ریڑھ کی ہڈی میں سوئیاں ٹوٹ گئی تھیں اور ہسپتال ان کو ہرجانے میں مجموعی طور پر ساڑھے 4کروڑ ڈالر(تقریباً5ارب روپے) کی خطیر رقم ادا کر چکا ہے اور ابھی کئی مقدمات زیرسماعت ہیں۔

Advertisement

Source DailyPakistan.com.pk