Advertisement

خاتون اوّل بشریٰ بی بی کی سوشل میڈیا پر گردش کرتی تصاویر جعلی تصاویرشیئرکرنے والوں کی اب خیرنہیں ،وزیراعظم آفس نے ایف آئی اے کو بڑاحکم جاری کردیا

Advertisements

نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں بات کرتے ہوئے معروف صحافی رؤف کلاسرا نے کہا کہ گذشتہ کچھ عرصہ سے میرے پاس ایک خبر ہے آج میں شئیر کر ہی دیتا ہے۔ پچھلے کچھ عرصہ سے وزیراعظم آفس کی جانب سے ایف آئی اے کے سائبر ونگ پر دباؤ ڈالا جا رہا ہے۔ وزیراعظم آفس نے ایف آئی اے کے سائبر ونگ سے رابطہ کر کے کہا کہ فیس بُک سمیت سوشل میڈیا سائٹس پر خاتون اول بشریٰ بی بی کی تصاویر گردش کر رہی ہیں، ان کی

تصاویر بنائی جاتی ہیں، مذاق اُڑایا جاتا ہے،طرح طرح کی باتیں ہوتی ہیں، فوٹو شاپ کی مدد سے بھی ان کی تصاویر بنائی جاتی ہیں، لہٰذا آپ انسداد دہشتگردی کے تحت کیسز کر کے ان افراد کو پکڑیں جو سوشل میڈیا پر بشریٰ بی بی کی فوٹو شاپ کی گئی تصاویر وائرل کرنے اور ان کا مذاق اُڑانے میں ملوث ہیں۔ ایف آئی اے کے سائبر ونگ نے صاف کہہ دیا کہ آپ اس حوالے سے کوئی قانون بنا دیں تو ہم کارروائی کر لیتے ہیں جس پر وزیراعظم آفس کا جواب آیا کہ نہیں آپ خود ہی کچھ ایسا کریں، اور خاتون اول کی تصاویر سوشل میڈیا پر فوٹو شاپ کرکے اپ لوڈ کرنے والے حضرات کے خلاف کوئی سخت قانون بنائیں اور اس جُرم کو سب سے بڑا جُرم قرار دے کر ان کے خلاف سخت کارروائی کریں۔رؤف کلاسرا نے بتایا کہ ایف آئی اے کے سائبر ونگ پر دباؤ ڈالا جا رہا ہے کہ اس حوالے سے زیر ٹالرینس کی پالیسی اپنائی جائے اور ایسے تمام افراد کو گرفتار کر لیا جائے تاکہ سوشل میڈیا پر خاتون اول بشریٰ بی بی کا مذاق اُڑانے اور ان کی فوٹو شاپ کی گئی تصاویر اپ لوڈ کر کے طرح طرح کے تبصرے کرنے کا سلسلہ بند ہو سکے۔ واضح رہے کہ خاتون اول بشریٰ بی بی کو ان کے حجاب اور نقاب کی وجہ سے سوشل میڈیا پر کئی مرتبہ تنقید کا نشانہ بنایا گیا ہے۔

Advertisement

x

We use cookies to give you the best online experience. By agreeing you accept the use of cookies in accordance with our cookie policy.

I accept I decline Privacy Center Privacy Settings