Advertisement

میں بھی فٹبال کا کھلاڑی ہوں ،امید ہے عمران خان کرکٹ کے بعد سیاسی میدان میں بھی

Advertisements

ترک صدر رجب طیب اردگان نے کہا ہے کہ پاکستان اور ترکی کے برادرانہ تعلقات ہیں، وزیر اعظم عمران خان نے  پاکستان میں تبدیلی کے لئے طویل جدوجہد  کی ہے ،عمران خان کی طرح میں بھی فٹ بال کا کھلاڑی رہا ہوں ،امید ہے کہ عمران خان کرکٹ کی طرح سیاست میں بھی کامیاب ہوں گے ،ترکی اور پاکستان کے درمیان گہرے او ر قریبی تعلقات ہیں ، دونوں ممالک کے تعلقات میں گرم جوشی پائی جاتی ہے،ان تعلقات کو مزید مضبوط کریں گے۔ انقرہ میں وزیر اعظم عمران خان کے ہمراہ مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ترک صدر رجب طیب اردگان کا کہنا تھا کہ ہمیں خوشی ہے عمران خان نے ترکی کا دورہ کیا، وقت کے ساتھ پاکستان اور ترکی کےتعلقات مزید مضبوط ہو رہےہیں،

 پاکستان اور ترکی کی دوستی کل، آج اور مستقبل میں مزید مضبوط ہوگی،خواہش ہے پاک ترک تعلقات طویل عرصے تک آگے بڑھیں.انہوں نے کہا کہ میں بھی عمران خان کی طرح فٹ بال کا کپتان تھا، عمران خان اب نئی ٹیم کی قیادت کر رہے ہیں،امید ہے کہ عمران خان کرکٹ کی طرح سیاست میں بھی کامیاب ہوں گے۔انہوں نے کہا کہ عمران خان سےسیاسی،عسکری اورتجارتی امورپربات کی ہے اور  تمام شعبوں میں تعاون کے امکانات کا جائزہ لیا گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ   پاکستان افغانستان اور ترکی کا سہ فریقی اجلاس افغان امن کےلیےاہم ثابت ہوگا۔ترک صدر رجب طیب اردگان نے ترک فاؤنڈیشن سےمتعلق سپریم کورٹ کے حالیہ فیصلےکا خیرمقدم کرتے ہوئے کہا کہ وزیر اعظم عمران خان سے  افغان صدر  اشرف غنی سے ہونے والی ملاقات پر تفصیلی تبادلہ خیال ہوا، وزیراعظم عمران خان کے ساتھ باہمی سمیت تجارتی امور پر بات چیت ہوئی ، پاکستان سے ٹریننگ کے لئے طیارے خریدنے پر گفتگو ہوئی۔

اس سے پہلے وزیراعظم عمران خان نے ترک صدر رجب طیب اردگان سے ملاقات کی جس میں دو طرفہ امور ، علاقائی اور عالمی امور پر بھی تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا۔صدارتی محل پہنچنےپرترک صدرنےوزیراعظم کاپرتپاک استقبال کیا،عمران خان کو گارڈ آف آنرزپیش کیا گیا۔وزیر اعظم عمران خان کے دورہ ترکی کے موقع پر  انقرہ میں وفود کی سطح پر بھی مذاکرات ہوئے،دونوں ممالک کے دفود کے درمیان سرمایہ کاری کے فروغ سمیت دیگر اہم علاقائی اور عالمی امور پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا۔پاکستان اور ترکی نے افغان مسئلے کے جلد پُرامن حل کیلئے مشترکہ کاوشیں جاری رکھنے کے عزم کا اعادہ کیا۔ترک وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ افغانستان میں قیام امن کے لیے پاکستان کا کردار مرکزی اہمیت کا حامل ہے۔میولوت چاوش اولو کا کہنا تھا کہ ترکی افغان امن کے لیے پاکستان کی کاوشوں کا معترف ہے۔وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ افغانستان،کشمیر سمیت اہم امور پر پاکستان اور ترکی کے مؤقف میں یکسانیت خوش آئند ہے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان اور ترکی کے تعلقات حکومتوں تک محدود نہیں ہیں۔

Advertisement

Source DailyAusaf
x

We use cookies to give you the best online experience. By agreeing you accept the use of cookies in accordance with our cookie policy.

I accept I decline Privacy Center Privacy Settings