Advertisement

میں تو وزیراعظم ہاؤس میں رہتابھی نہیں بل 15 لاکھ کیسے آگیا بجلی کا بل دیکھ کر عمران خان بھی پریشان ۔۔فوراََ اہم حکم جاری کردیا

Advertisements

وفاقی وزیراطلاعات ونشریات فواد چودھری نے کہا ہے کہ وزیراعظم عمران خان بجلی کا زیادہ بل آنے پر برہم ہوگئے، وزیراعظم نے وزیراعظم ہاؤس کے اسٹاف کے آڈٹ کا حکم دے دیا ، عمران خان کا کہنا کہ جب میں وہاں رہتا نہیں توبل اتنازیادہ کیسے آگیا ہے؟ وفاقی وزیراطلاعات فواد چودھری نے وفاقی کابینہ کے اجلاس کے بعد پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ وزارت داخلہ نے 20افراد کے نام ای سی ایل سے نکالنے کی سفارش کی لیکن وفاقی کابینہ نے نام فوری نکالنے سے معذرت کرلی ہے۔


جن 20افراد کے نام نکالنے کا حکم دیا گیا ہے اس بارے تفصیلی فیصلے کا انتظار کررہے ہیں۔ تفصیلی فیصلہ آنے پر ہی نام نکالنے سے متعلق غور کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ وفاقی کابینہ کے اجلاس میں معاشی پالیسیوں پر اطمینان کا اظہار کیا گیا ہے۔ معاشی پالیسیوں کے نتائج سامنے آنا شروع ہوگئے ہیں۔ خوشی کی بات یہ ہے کہ ہماری حکومت کی پالیسی ایکسپورٹ کوبہتر بنانا تھا۔دسمبر میں 4.5 فیصد برآمدات بڑھی ہیں جبکہ درآمدات میں 8.5 فیصد کمی آئی ہے۔ اس کا مطلب تجارتی خسارے میں 19فیصد کمی آئی ہے۔انہوں نے کہا کہ اوورسیز پاکستانیوں کا دل پاکستان کیلئے دھڑکتا ہے۔ ان کے مسائل حل کرنے کیلئے کام کررہے ہیں۔

وزیراعظم نےبیرون ملک پاکستانیوں کوسرکاری نوکریوں کے مواقع کی پالیسی بنانے کا کہا ہے۔ گیس بحران کا معاملہ تھا لیکن ہم نے اس کوحل کیا ہے۔ملک میں بڑی آبادی گیس سے محروم ہے۔ 63 فیصد لوگ ایل پی جی استعمال کرتے ہیں دیہاتوں میں لوگ لکڑیاں استعمال کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ شاہد خاقان عباسی خود کوگیس کا آئن اسٹائن سمجھتے ہیں۔ ن لیگ کے وزراء نے جس جس چیز پرہاتھ رکھا وہ نقصان میں گئی۔ شاہد خاقان نے چارج سنبھالا تو قرض نہیں تھا لیکن جب وزارت چھوڑی تو157ارب قرض تھا۔ ملک بھر میں 48 ارب کی گیس چوری ہورہی ہے۔


میڈیا میں یہ بات آئی ہے کہ وزیراعظم ہاؤس کا بل 15لاکھ روپے آیا تھا۔ نوازشریف کے دور میں بہت بل آتا تھا اور 80 ہزار سے زائد یونٹس استعمال آتے تھے۔لیکن عمران خان کے دور میں اب صرف 44 ہزار یونٹس استعمال ہوتے ہیں۔وزیراعظم نے بل پرحیرانگی کا اظہار کیا اور انکوائری کا حکم دے دیا ہے۔وزیراعظم نے وزیراعظم ہاؤس کے اسٹاف کے آڈٹ کا حکم دے دیا ہے۔انہوں نے کہا کہ وفاقی حکومت نے کراچی میں عوامی مسائل پر توجہ دینے کا فیصلہ کیا ہے۔ متحدہ عرب امارات کے ساتھ پینے کے صاف پانی کا معاہدہ ہوگیا ہے۔ کراچی والوں کے پینے کے پانی کا مسئلہ حل ہوجائے گا۔

Advertisement

x

We use cookies to give you the best online experience. By agreeing you accept the use of cookies in accordance with our cookie policy.

I accept I decline Privacy Center Privacy Settings