Advertisement

اختیارات اب سیاستدانوں اور اراکین اسمبلی کی بجائے عوام کے ہاتھ میں ہونگے

Advertisements

 وزیراعظم عمران خان نے اسلام آباد میں اعلیٰ سطحی اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے خیبرپختونخوا میں ایک ماہ کے اندر نیا بلدیاتی نظام نافذ کرنے کی ہدایت کر دی۔ اجلاس میں نئی لوکل حکومتوں کے نظام میں اصلاحات لانے کا فیصلہ بھی کیا گیا۔ وزیر اعظم نے کہا کہ مقامی نمائندے مقامی سطح پر اپنے مسائل کو بہتر انداز میں حل کر سکتے ہیں، خیبرپختونخوا میں ویلیج کونسلز کے قیام کا تجربہ بہت کامیاب رہا۔وزیراعظم نے کہا ہے کہ اس نظام کو مزید بہتر کر کے مقامی نمائندوں کو مزید اختیارات دیے جائیں گے

کیونکہ وہ معاملات کو حل کرنے کی زیادہ صلاحیت رکھتے ہیں۔ انکا کہنا تھا کہ بدقسمتی سے ابھی تک مقامی حکومتوں کا نظامی ڈانچہ سب سے بڑا مسئلہ رہا ہے لیکن اب اسے بہتر کیا جائے،عمران خان کی ہدایت۔ وزیراعظم اسلام آباد میں اعلیٰ سطحی اجلاس کی صدارت کر رہے تھے، اجلاس میں وزیر اعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان اور گورنر شاہ فرمان شریک ہوئے ان کے علاوہ مشیرشہزاد ارباب ، معاون خصوصی افتخار درانی اور صوبائی وزراء نے بھی شرکت کی۔ وزیر اعظم نے اجلاس میں کہا کہ انتظامی ناکامی کے باعث اکثر مقامات صحت اور تعلیم جیسی بنیادی سہالیات سے محروم رہتے ہیں۔ انہوں نے نئے لوکل سسٹم کو ایک ماہ میں ضروری مراحل مکمل کر کے نافذ کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ اس نظام میں مزید بہتری لا کر عوام کو مزید با اختیار بنایا جائے۔ انہوں نے کہا کہ یہ نظام اس لیے ضروری ہے کہ مقامی لوگ اپنے مسائل کو بہتر انداز میں حل کر سکتے ہیں اس لیے جلد از جلد اس نظا کو نافذ کیا جائے۔

Advertisement

Source DailyAusaf
x

We use cookies to give you the best online experience. By agreeing you accept the use of cookies in accordance with our cookie policy.

I accept I decline Privacy Center Privacy Settings