Advertisement

ایک طرف انگلینڈ میں مسلسل ناکامی ،دوسری طرف قومی کرکٹر ز نے رات کے وقت ایسا کام کرنا شروع کردیا کہ کرکٹ مداحوں کے غصے کی انتہا نہ رہے گی

Advertisements

برطانیہ میں پاکستانی کرکٹ ٹیم کے کھلاڑیوں نے رات کا کھانا باہر کھانا معمول بنا لیا۔نجی نیوز چینل ہم نیوز کے مطابق شام ہوتے ہی زیادہ تر کھلاڑی کھانے کی تلاش میں مختلف ریسٹورینٹس کا رخ کرتے ہیں جبکہ لندن میں رہنے والے پاکستانی بھی کھلاڑیوں کو کھانا کھلاتے ہیں۔پی سی بی حکام کا کہنا ہے کہ روزانہ ناشتے کے بعد کھلاڑیوں کو رات کے کھانے کے پیسے دے دیے جاتے ہیں تاکہ وہ اپنی مرضی کے مطابق کھانا کھاسکیں۔

واضح رہے کہ پاکستان کرکٹ ٹیم ورلڈ کپ سے قبل ان دنوں دورہ انگلینڈ پر ہے جہاں اسے ایک ٹی ٹوئنٹی اور دو ون ڈے میچز میں شکست ہوچکی ہے جبکہ ایک ایک روزہ میچ بارش کے باعث منسوخ ہوگیا۔

حاملہ بہو کو ہسپتال لے جانے والی ساس کے ساتھ ہسپتال کے ڈلیوری روم میں اجتماعی زیادتی

 بھارتی ریاست راجستھان میں ایمبولینس ڈرائیور اور کمپاﺅنڈر نے ہسپتال کے ڈلیوری روم میں حاملہ بہو کو چیک اپ کیلئے لانے والی ساس کو اجتماعی زیادتی کانشانہ بنادالا۔ بھارتی میڈیا کے مطابق 7 مئی کی رات کو کٹھومر کے سرکاری ہسپتال میں خاتون کے ساتھ زیادتی کا واقعہ پیش آیا۔ پولیس کا کہنا ہے کہ واقعے کے 2 روز بعد متاثرہ خاتون نے پولیس سے رجوع کیا اور واقعے کی تفصیلات بتائیں۔ خاتون کا کہنا ہے کہ وہ زیادتی کے واقعے کے باعث خوفزدہ ہوگئی تھی اور اسی وجہ سے پولیس کے پاس پہلے شکایت درج نہیں کراپائی۔

ایف آئی آر کے مطابق ہسپتال سے چھٹی کیلئے ضروری کاغذات کا کہہ کر ایمبولینس ڈرائیور رام نواس گجر 40 سالہ خاتون کو ڈلیوری روم میں لے گیا ۔ خاتون جیسے ہی کمرے میں پہنچی تو ڈرائیور نے کمرے کا دروازہ بند کردیا اور کمپاﺅنڈر گرجا پرساد کے ساتھ مل کر خاتون کو دبوچ لیا۔ ملزمان نے خاتون کے منہ میں کپڑا ٹھونس کر اسے اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنایا۔واقعے کے بعد سے دونوں ملزمان فرار ہیں جنہیں تلاش کرنے کیلئے کارروائی شروع کردی گئی ہے۔

Advertisement

Source DailyPakistan

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More

x

We use cookies to give you the best online experience. By agreeing you accept the use of cookies in accordance with our cookie policy.

I accept I decline Privacy Center Privacy Settings