Advertisement

مکہ مکرمہ کی پہاڑیوں پر پاکستانی خاندانوں نے ڈیرے ڈال لیے ،یہ در اصل کون ہیں ؟کوئی توقع ہی نہ کر سکتا تھا

Advertisements

غیر قانونی طورپر مقیم پاکستانیوں نے مکہ مکرمہ کے مضافات میں ڈیرے ڈال لئے ہیں ۔ پہاڑوں پر چھونپڑیاں بنا کر اپنے اہل خانہ کے ہمراہ مقیم ہیں ۔ سبق نیوز کی جانب سے کئے جانے والے سروے میں کہا گیا ہے کہ مکہ مکرمہ کے علاقے الکعکیہ کے جنوب میں مویشی منڈی کے اطراف میں پہاڑی سلسلے پر کی۔ پاکستانی خاندان غیر قانونی طور پر آباد ہیں ۔ پتھر اور لکڑی کے تختوں سے بنی جھگیاں جو ہر قسم کی ضروریات زندگی سے خالی ہیں ۔

ان لوگوں کے پاس بنیادی ضروریات زندگی بھی نہیں ۔ علاقے میں رہنے والوں کا کہنا ہے کہ غیر قانونی طور پر مقیم یہ خاندان کچھ عرصہ قبل یہاں آکر رہنے لگے ہیں ۔ انہوں نے جس طرح یہ جھگیاں بنائی ہیں وہاں بنیادی ضروریات کا کوئی سامان نہیں ۔ سنگلاخ چٹانوں پر بچے بھی رہتے ہیں اور خواتین بھی ۔ غیر قانونی طور پر مقیم ایک شخص کا کہنا تھا کہ ہم کہاں جائیں ؟ مجبور ہو کر ان پہاڑوں میں رہ رہے ہیں ۔ اس حوالے سے قریبی آبادی کے لوگوں کا کہنا تھا کہ قانون نافذ کرنے والے ادارے کے اہلکار اس طرح کے رجحان کا سد باب کریں کیونکہ اس طرح جرائم پیشہ بھی یہاں آسکتے ہیں ۔ انہوں نے جس طرح یہ جھگیاں بنائی ہیں وہاں بنیادی ضروریات کا کوئی سامان نہیں ۔ سنگلاخ چٹانوں پر بچے بھی رہتے ہیں اور خواتین بھی ۔ غیر قانونی طور پر مقیم ایک شخص کا کہنا تھا کہ ہم کہاں جائیں ؟ مجبور ہو کر ان پہاڑوں میں رہ رہے ہیں ۔ اس حوالے سے قریبی آبادی کے لوگوں کا کہنا تھا کہ قانون نافذ کرنے والے ادارے کے اہلکار اس طرح کے رجحان کا سد باب کریں کیونکہ اس طرح جرائم پیشہ بھی یہاں آسکتے ہیں ۔ انہوں نے جس طرح یہ جھگیاں بنائی ہیں وہاں بنیادی ضروریات کا کوئی سامان نہیں ۔ سنگلاخ چٹانوں پر بچے بھی رہتے ہیں اور خواتین بھی ۔

غیر قانونی طور پر مقیم ایک شخص کا کہنا تھا کہ ہم کہاں جائیں ؟ مجبور ہو کر ان پہاڑوں میں رہ رہے ہیں ۔ اس حوالے سے قریبی آبادی کے لوگوں کا کہنا تھا کہ قانون نافذ کرنے والے ادارے کے اہلکار اس طرح کے رجحان کا سد باب کریں کیونکہ اس طرح جرائم پیشہ بھی یہاں آسکتے ہیں ۔

Advertisement

Source DailyPakistan.com.pk
x

We use cookies to give you the best online experience. By agreeing you accept the use of cookies in accordance with our cookie policy.

I accept I decline Privacy Center Privacy Settings