Advertisement

عمران خان پہلی بارجلال میں آگئے ۔۔اپنی قریبی 2اہم ترین شخصیات میں سے ایک کو فارغ کرنے کا فیصلہ

Advertisements

عمران خان پہلی بارجلال میں آگئے ۔۔اپنی قریبی 2اہم ترین شخصیات میں سے ایک کو فارغ کرنے کا فیصلہ ، ایک تو فواد چوہدری مگر دوسری کون ؟ نام جان کر یقین نہیں کریں گے ۔۔ حکومت کی 100روزہ کارکردگی پر ریلیز ہونیوالے ’’ہم مصروف تھے‘‘ کے اشتہار پر وزارت اطلاعات اور وزیراعظم کے مشیر کے درمیان چپقلش سامنے آگئی، وزیراعظم نے میڈیا سے تعلقات استوار کرنے کے لئے ان دو شخصیات میں سے ایک کو فارغ کرنے کا فیصلہ کرلیا۔

انتہائی معتبرذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ سو روزہ کارکردگی پر ریلیز ہو نیوالے اشتہار کی ڈیزائننگ سینیٹرفیصل جاوید اور وزیراعظم کے مشیر افتخار درانی نے کی ہے اور اس سلسلے میں وزارت اطلاعات کے وفاقی وزیر فواد چوہدری سے مشاورت نہیں کی گئی جس کے نتیجے میں اشتہار چھپنے کے بعد وفاقی وزیر سے سوال کیا گیا تو انہوں نے دو ٹوک جواب دیا کہ ایسے اشتہارات ان کی مشاورت سے نہیں چھاپے جاتے۔ ادھر پاکستان تحریک انصاف کے انتہائی معتبر ذرائع نے بتایا کہ افتخار درانی اور وزیراطلاعات ونشریات فواد چوہدری کے درمیان کافی عرصہ سے میڈیا پالیسی پر چپقلش جاری تھی اور اس دوران سینیٹر فیصل جاوید آدھمکے اور ان کے مطابق وزارت اطلاعات کے وہ بھی مضبوط امیدوار ہیں۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ آئندہ قومی اسمبلی کے اجلاس میں ’’ہم مصروف تھے‘‘ کے اشتہار کے اوپر بھرپور بحث کیے جانے کا بھی امکان ہے۔وزیراعظم نے کفایت شعاری پروگرام کے تحت کروڑوں روپے پی ایم ہائوس سے جو بچائے ہیں وہ ایک ایسے اشتہار کی نذر کردیئے گئے جس کو ریلیز کیے گئے عرصہ گزر گیا تاہم وہ آج تک کسی کے سمجھ میں نہ آسکا ہے۔ دوسری طرف نیب کے اسپیشل پراسیکیوٹر عمران شفیق نے اپنے عہدے سے استعفٰی دے دیا۔ میڈیا کے مطابق اسپیشل پراسیکیوٹر نیب عمران شفیق نے اپنے عہدے سے استعفٰی دے دیا ہے،

تاہم ان کی منصب چھوڑنے کی وجوہات سامنے نہیں آئیں جب کہ دوسری جانب ترجمان نیب کا کہنا ہے کہ نیب کو ابھی تک اسپیشل پراسیکیوٹر عمران شفیق کا استعفیٰ موصول نہیں ہوا۔ذرائع کے مطابق عمران شفیق نے گزشتہ روز العزیزیہ اسٹیل ملز کیس میں نیب کی جانب سے حتمی بحث کی تھی، وہ ہائیکورٹ میں سابق صدر آصف زرداری کی اپیلوں کے خلاف اسپیشل پراسیکیوٹر نیب تعینات تھے، سابق وزیراعظم نوازشریف کی اپیلوں سمیت اسلام آباد ہائی کورٹ میں وزیراعظم کے معاونِ خصوصی زلفی بخاری کا نام ای سی ایل میں ڈالنے کے خلاف اپیل کیس میں نیب کی نمائندگی کررہے تھے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ عمران شفیق نے گزشتہ روز زلفی بخاری کی دہری شہریت پرہائیکورٹ میں سخت موقف اپنایا تھا اور مقدمے کی سماعت کے بعد عدالت کے احاطے میں زلفی بخاری اور اسپیشل پراسیکیوٹر میں تلخ کلامی بھی ہوئی۔عمران شفیق نے ایکسپریس نیوز سے غیر رسمی گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ذاتی وجوہات کی بنا پراستعفٰی دے رہا ہوں۔

Advertisement

Source DailyAusaf
x

We use cookies to give you the best online experience. By agreeing you accept the use of cookies in accordance with our cookie policy.

I accept I decline Privacy Center Privacy Settings