Advertisement

اگر آپ دھوپ سے بچنے کیلئے کالا چشمہ استعمال کرتے ہیں تو اگلی مرتبہ اسے پہننے سے پہلے یہ انتہائی تشویشناک خبر ضرور پڑھ لیں، ایسا نہ ہو کہ آنک

Advertisements

لوگ سورج کی بالائے بنفشی شعاعوں سے بچنے کے لیے دھوپ کے چشمے استعمال کرتے ہیں مگر اب سائنسدانوں نے اس حوالے سے اہم وارننگ جاری کر دی ہے۔سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ ”جو لوگ دھوپ کے چشمے استعمال کرتے ہیں انہیں ہر دو سال بعد چشمہ تبدیل کر لینا چاہیے، کیونکہ وقت کے ساتھ ساتھ مسلسل پڑنے والی شعاعیں چشموں کے لینز کو خراب کر دیتی ہیں اور وہ بالائے بنفشی شعاعوں کو روکنے کی صلاحیت سے بتدریج محروم ہو جاتے ہیں جس سے یہ شعاعیں آنکھوں تک پہنچ کر انہیں نقصان پہنچا سکتی ہیں۔“ برازیل کے سائنسدانوں کو کہنا تھا کہ ”الٹراوائلٹ فلٹر خراب ہونے کے باعث آنکھوں کو ہونے والا نقصان طویل دورانیے کا بھی ہو سکتا ہے اور ممکنہ طور پر بینائی کو پہنچنے

والا یہ نقصان کبھی دوبارہ واپس نہیں لوٹایا جا سکتا۔“ سائنسدانوں نے مطالبہ کیا کہ دھوپ کے چشموں کے لیے ایک معیار مقرر کیا جانا چاہیےجس کے تحت ان پر نظرثانی ہو سکے اور لوگوں کو نقصان سے بچایا جا سکے۔ ساؤ پاؤلو یونیورسٹی کی پروفیسر للیان وینچرا کا کہنا تھا کہ ” مختلف ممالک میں موسم کی شدت کے تناسب سے بالابنفشی شعاعیں ہوتی ہیں۔ گرم ممالک میں یہ شعاعیں بہت زیادہ ہوتی ہیں لہٰذا ان ممالک کے لوگوں کو 2سال سے بھی جلدی چشمہ تبدیل کر لینا چاہیے۔“

Advertisement

Source dailyausaf.com
x

We use cookies to give you the best online experience. By agreeing you accept the use of cookies in accordance with our cookie policy.

I accept I decline Privacy Center Privacy Settings