Advertisement

امریکی جاسوس ڈاکٹر شکیل آفریدی کیلئے بڑاریلیف، وزیراعظم کے دورہ امریکہ کے بعد مجرم کو خوشخبری سنادی گئی

Advertisements

 وزیراعظم عمران خان کے امریکہ کے دورے کے بعد پاکستان میں گرفتار پاکستانی نژاد امریکی جاسوس ڈاکٹر شکیل آفریدی کے اہل خانہ نے بھی امیدیں وابستہ کرلیں۔اس حوالے سے میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ جیل حکام نے اس ہائی پروفائل قیدی کے لئے قواعد و ضوابط نرم کر دیے ہیں۔شکیل آفریدی کے وکیل قمرندیم آفریدی کا کہنا ہے کہ وزیراعظم کے دورے واشنگٹن کے بعد شکیل آفریدی کے بارے میں جیل حکام کے رویوں میں تبدیلی محسوس کی گئی ہے۔یہ بات شکیل آفریدی کے بھائی جمیل آفریدی اور دیگر اہل خانہ کے حوالے سے بتائی گئی۔شکیل آفریدی کو پشاور سینٹرل جیل سے ساہیوال جیل منتقل کیا گیا جس پر متعلقین نے خوشی کا اظہار کیا ہے۔شکیل آفریدی کے وکیل کا کہنا ہے

کہ اس سے قبل ان کے موکل شکیل آفریدی سے جیل میں برا سلوک ہوتا تھا۔میڈی رپورٹ میں مزید بتایا گیا ہے کہ سرکاری رائے لینے کے لئے رابطہ کرنے پر نام نہ ظاہر کرنے کی شرط پر ایک سرکاری اہلکار نے ان تمام باتوں کو غلط اور بے بنیاد قرار دے دیا۔انہوں نے کہا کہ حکومت قانون اور عدالتی معاملات میں مداخلت نہیں کرتی، جیل کے اپنے ضابطے ہیں جن پر عمل کیا جاتا ہے یہ اس بات کا ثبوت ہے کہ جیل میں کسی سے زیادتی نہیں ہورہی ہیں۔واضح رہے وزیراعظم عمران خان نے اپنے امریکہ کے دورے میں ایک انٹرویو کے دوران کہاتھاکہ کہ ڈاکٹر عافیہ صدیقی کے بدلے شکیل آفریدی کو حوالے کرنے پر بات ہو سکتی ہے۔وزیراعظم عمران خان نے یہ بھی کہا تھا کہ یہ بہت حساس معاملہ ہے کیونکہ شکیل آفریدی کو پاکستان میں ایک جاسوس تصور کیا جاتا ہے۔خیال رہے کہ ڈاکٹر شکیل آفریدی پیشے کے اعتبار سے سرجن ہیں ،مئی 2011 میں سی آئی اے کو اسامہ بن لادن کی جعلی ویکسینیشن مہم کے ذریعے ایبٹ آباد میں نشاندہی پر گرفتار کیا گیا تھا۔

Advertisement

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More