Advertisement

ڈیل کی پیشکش نواز شریف نے نہیں بلکہ ارشد ملک نے کی حامد میر ارشد ملک سے متعلق تہلکہ خیز تفصیلات سامنے لے آئے

Advertisements

معروف صحافی حامد میر کا کہنا ہے کہ میری اطلاعات کے مطابق ارشد ملک نے چند ماہ پہلے رمضان کے مہینے میں (مئی 2019ء) ن لیگ کی اہم شخصیات سے رابطے کیے۔اس کے بعد ارشد ملک پاکستان سے باہر جا کر شریف خاندان کے اہم فرد سے ملے۔ارشد ملک نے وہاں پر ڈیل کرنے کی کوشش کی۔حامد میر نے کہا شریف خاندان میں سے کسی نے کیا ارشد ملک کو رشوت کی پیشکش کرنی ہے بلکہ انہوں نے خود ڈیل کرنے کی کوشش کی،حامد میر نے کہا کہ ارشد ملک کی ساری گفتگو ریکارڈڈ ہے اور اس کی ویڈیو بھی موجود ہے۔

جب وہ ویڈیوز عدالت میں پیش کی جائیں گی تو ارشد ملک کا موقف بلکل غلط ثابت ہو جائے گا اور ان کی پریس ریلیز کی دھجیاں بکھر جائیں گے،حامد میر نے کہا کہ میرے خیال سے ارشد ملک کا نام ای سی ایل میں ڈالنا چاہئیے۔ کیونکہ انہوں نے پہلے بھی کہا تھا کہ میں فیملی کے ہمراہ باہر چلا جاؤں گا اور پھر انہوں نے باہر جا کر ڈیل کرنے کی کوشش کی۔

س سے قبل بھی ایک میڈیا رپورٹ میں بتایا گیا تھا کہ احتساب عدالت کے جج ارشد ملک نے رمضان المبارک میں سابق وزیراعظم نواز شریف کے رشتہ دار سے ملاقات کی تھی۔ اس حوالے سے سینئیر صحافی انصار عباسی نے کہا کہ ن لیگ کے ذرائع کے مطابق جج ارشد ملک اور نواز شریف کے رشتہ دار ، دونوں کے درمیان ہونے والی اس ملاقات کی خفیہ ریکارڈنگ کی گئی اور مبینہ طور پر اس میں جج ارشد ملک کے پچھتاوے اور اس بات کا اعتراف موجود ہے کہ نواز شریف کو غلط سزا سنائی گئی۔ 26 رمضان کو ہونے والی اس ملاقات کے حوالے سے کہا گیا کہ یہ وہ تازہ ترین ملاقات ہے جس کی خفیہ ریکارڈنگ کی گئی، یہ تمام ویڈیوز شریف فیملی کے پاس موجود ہیں۔

مذکورہ ملاقات میں جج ارشد ملک مبینہ طور پر اپنے مستقبل کے حوالے سے بھی غور کرتے ہوئے دکھائے گئے.خیال رہےویڈیو سکینڈل کے بعد آج اسلام آباد ہائیکورٹ نے احتساب عدالت کے جج ارشد ملک کو عہدے سے ہٹانے کے لیے وزارت قانون و انصاف کو خط لکھا تھا۔

Advertisement

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More

x

We use cookies to give you the best online experience. By agreeing you accept the use of cookies in accordance with our cookie policy.

I accept I decline Privacy Center Privacy Settings