Advertisement

اگر میڈیا پر کسی مجرم کا بیان روکنا چاہیے تو وہ تم ہو۔۔مریم نواز نے وزیر اعظم عمران خان کو امریکی عدالت سے مجرم یافتہ قرار دے دیا

Advertisements

جن کو مجرم کہتے ہو ان کو مجرم ثابت کرنے کے لیے جو گھناؤنا کھیل کھیلا اس کا بھانڈا پھوٹ چکا ہے۔البتہ تم امریکی عدالت سے ثابت شدہ مجرم ہو۔اور اس مقدمے کا فیصلہ جج کو بلیک میل کر کے نہیں، تمھارے خلاف ناقابلِ تردید شواہد کی بنیاد پر کیا گیا۔اس لحاظ سے یہ حکم صرف تم پر عائد ہوتا ہے۔

پریس کانفرنس میں جج ارشد ملک کی ویڈیو دکھانے ا ور ان پر الزامات لگانے کے بعد لگ رہا تھا کہ کچھ ہو جائے گا مگر سیاسی ہلچل کے علاوہ کچھ نہیں ہوا اور مریم نواز نے اگلے دن منڈی بہاﺅالدین میں جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے نواز شریف کو بے گناہ قرار دیا اور حکومت کو ناکام معاشی پالیسیوں اور عوام کومہنگائی کی چکی میں پیسنے کی بنا پر مستعفی ہونے کا کہا ہے۔

یہ پہلی بار نہیں ہے کہ مریم نواز نے وزیراعظم عمران خان کو مستعفی ہونے کا کہا ہے بلکہ وہ کئی بار پہلے بھی استعفے کا تقاضا کر چکی ہیں۔ منڈی بہاﺅ الدین میں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے مریم نواز نے کہا کہ عزت اورذلت اللہ کے ہاتھ میں ہے، نواز شریف کو ووٹ دینے والوں کا سر فخر سے بلند ہے، نواز شریف کواللہ نے عوام میں سرخرو کردیا ہے۔انہوں نے کہا کہ دشمنوں نے مجھے اور نوازشریف کو گھیرا ہوا ہے، نوازشریف کا کیا قصور تھا کہ ایک کے بعد ایک سزا سنائی گئی، انہیں عوام کی آواز اٹھانے اور ووٹ کو عزت دو کا نعرہ لگانے پر سزا ملی۔

ن لیگ کی نائب صدر کا کہنا تھا کہ نوازشریف بے گناہ ثابت ہوچکے ہیں، انہیں اب جیل میں رکھناجرم ہے، وہ بے گناہ ہی نہیں بہادر بھی ہیں، یہ احتساب نہیں انتقام ہے، یہ جانتے ہوئے بھی نوازشریف سر جھکا کر جیل چلا گیا۔مریم نواز نے کہا کہ آج بجلی،گیس، آٹا، دال، چاول اور سبزی مہنگی ہوئی یا نہیں؟ اگر یہ نالائق اعظم اپنی نااہلی اور نالائقی کرپشن کے پیچھے چھپانے کی کوشش کرے گا تو عوام اس کا گریبان پکڑیں، مہنگائی کرنے والے عمران خان استعفا دو اور گھر جائو،وزیراعظم سمجھتے ہیں مہنگائی کا بم گراکر پتلی گلی سے نکل جائیں گے۔

Advertisement

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More

x

We use cookies to give you the best online experience. By agreeing you accept the use of cookies in accordance with our cookie policy.

I accept I decline Privacy Center Privacy Settings