Advertisement

بھارت نے پاکستان کے آگے گھٹنے ٹیکتے ہوئے ایسا ناقابل یقین اعلان کردیا کہ پوری دنیا حیرت میں ڈوب گئی

Advertisements

پاکستان کی جانب سے کرتار پور کوریڈور کی تیزی سے تعمیر اور دنیا بھر کے سکھوں کے پاکستان پر بڑھتے ہوئے اعتماد کی وجہ سے بھارت پاکستان کیساتھ کرتارپور کوریڈور سے متعلق آفیشل حکام کی بات چیت پر تیار ہوگیا ہے۔سفارتی ذرائع کے مطابق بھارت کی طرف سے 11 سے 14 جولائی 2019 تک لاہور کے واہگہ بارڈر پر مذاکرات کی تجویز دی گئی ہے ‘تاہم پاکستان کی جانب سے ابھی تک اس تجویز کے جواب میں کوئی تاریخ حتمی نہیں کی گئی ہے۔بھارت نے 2 اپریل کو واہگہ بارڈر پر طے شدہ میٹنگ میں اس وجہ سے انکارکردیا

تھا کہ پاکستان کی طرف سے کرتارپور کے حوالے بنائی گئی کمیٹی میں شامل بعض سکھ رہنما جن میں گوپال سنگھ چاولہ قابل ذکر ہیں وہ خالصتان تحریک کے حامی سمجھے جاتے ہیں،دونوں ممالک کے ٹیکنیکل ماہرین کے مابین کرتارپور بارڈرپر متعدد میٹنگز ہوچکی ہیں تاہم اب جولائی میں ہونے والی یہ متوقع ملاقات دونوں ملکوں کے آفیشل حکام کی دوسری بیٹھک ہوگی۔

مسلم لیگ ن میں فاروڈ بلاک سامنے آگیا ہے۔ پارٹی سے تعلق رکھنے 26 اراکین قومی و صوبائی اسمبلی نے وزیراعظم عمران خان سے ملاقات کرکے انکی قیادت پراعتماد کا اظہار کردیا ہے جبکہ،ترجمان ن لیگ کہتی ہیں فارورڈ بلاک ہوتا تو بجٹ میں ووٹ نہ پڑتے۔ذرائع کے مطابق پنجاب اسمبلی کے سترہ اور قومی اسمبلی کے نو ن لیگی اراکین نے جو اپنی قیادت کی پالیسیوں سے متفق نہیں وزیراعظم عمران خان سے ملاقات کرکے انہیں اپنی حمایت کا یقین دلادیا ہے۔بنی گالہ میں ملاقات کے دوران منحرف اراکین نے عمران خان کی پالیسیوں

کی حمایت کی جبکہ وزیراعظم نے ن لیگی اراکین کے موقف کا خیر مقدم کیا۔ ذرائع کے مطابق ایک سینئر رہنما اس فاروڈ بلاک کی قیادت کر رہا ہے اور بجٹ سے پہلے سے یہ اراکین جہانگیر ترین سے رابطے میں تھے۔ ملاقات میں جہانگیر ترین،علیم خان،نعیم الحق اور وزیراعلٰی پنجاب عثمان بزدار بھی موجود تھے۔وزیراعلٰی پنجاب کو وزیراعظم نے خصوصی طور پر طلب کیا تھا۔ سترہ ایم پی ایز پہلے مرحلے میں گورنر پنجاب چوہدری سرور سے ملے تھے اور گورنر نے وزیراعظم کے ایک معاون خصوصی سے لاہور میں ان کی ملاقات کروائی تھی۔ ذرائع کے مطابق منحرف اراکین کا کہنا ہے کہ فنڈز چاہیے نہ عہدہ انہیں بلدیاتی انتخابات میں ایڈ جسٹ کیا جائے۔ ترجمان ن لیگ مریم اورنگزیب کا کہنا ہے کہ ایسی خبریں تبصرے کے بھی قابل نہیں اگر فارورڈ بلاک ہوتا تو بجٹ میں ہمارے اتنے ووٹ نہ ہوتے تاہم انہوں نے باضابطہ طور پر اس کی تردید نہیں کی تاہم ذرائع نے مزید بتایا کہ ن لیگ کے منحرف اراکین کا تعلق جنوبی و وسطی پنجاب سے ہے۔

Advertisement

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More

x

We use cookies to give you the best online experience. By agreeing you accept the use of cookies in accordance with our cookie policy.

I accept I decline Privacy Center Privacy Settings