Advertisement

چینی کمپنی ریت کی آڑ میں پاکستان سے کتنے من سونا لے اڑی

Advertisements

پاکستان قدرتی ذخائر مالا مال اور اس میں بے شمار قدرتی خزانے چھپے ہوئے ہیں ۔ نجی ٹی وی کے ایک پروگرام میں انکشاف کیا گیا ہے کہ لاہور ہائی کورٹ میں ایک کیس کی سماعت ہوئی جس میں کہا گیا کہ پاکستان نے ایک چینی کمپنی کو ریت کا ٹھیکہ دیا ہے ، چینی کمپنی ریت کی بجائے پاکستان سے سونا نکال کر چین بھجواتی رہی ،سونا چند تولے یا پھر چند کلو نہیں بلکہ  حجم 82من بتایا گیا ہے اور یہ سب کچھ پاکستان کی محکمہ معدنیات کی ناک تلے ہوتا رہا ۔

تفصیلات کے مطابق نجی ٹی وی کے پروگرام کی میزبان نے انکشاف کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ سونا پنجاب کے ضلع اٹک کا ہے جہاں درخواست گزار نے موقف اختیار کرتے ہوئے کہا ہے کہ چینی کمپنی ہائی اونگ سوپر کو سی پیک کے تحت بننے والی موٹرو ے برہان تا حویلیاں موٹروے کی تعمیر کیلئے اٹک سے ریت نکالنے کیلئے ٹھیکہ دس کروڑ 20لاکھ میں دو سال کیلئے دیاگیا ۔کمپنی نے گیارہ ماہ میں 20ارب سے زائد 82من سے زائد سونا نکال کر چین بھجوایا ۔ جبکہ محکمہ معدنیات اس علاقے میں سونے اور دیگر قیمتی معدنیات سے باخوبی آگاہ ہے ۔ ہائی کورٹ نے اس کیس کی سماعت کرتے ہوئے حکم امتناعی میں توسیع کر دی ہے ۔ عدالت نے سیکرٹری معدنیات سے ٹیکنیکل کمیٹی کی رپورٹ طلب کرتے ہوئے وکلا کو بحث کیلئے بھی طلب کر لیا ہے ۔

Advertisement

Source daily ausaf

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More

x

We use cookies to give you the best online experience. By agreeing you accept the use of cookies in accordance with our cookie policy.

I accept I decline Privacy Center Privacy Settings