Advertisement

شیخ رشید نے عمران خان کو انہیں لندن جانے کی اجازت دینے کا کہا تو عمران خان نے کیا کہا؟

Advertisements

نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں بات کرتے ہوئے عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید نے کہا کہ ایمنسٹی کی اسکیم جس نے 5 ہزار ارب سے تیس ہزار ارب تک قرضہ پہنچایا ، یہ عمران خان کے مستقبل کے ایجنڈے کا ایک اہم ستون ہے۔ انہوں نے کہا کہ میں نے پہلے کہا تھا کہ بجٹ پاس ہو جائے گا۔ بجٹ کے بعد اب عمران خان کی جانب سے بنایا گیا کمیشن اپنا کام کرے گا اور ان کا پانچ ہزار ارب کا فراڈ پکڑا جائے گا۔

چوبیس ہزار تو ایسے کہہ رہے ہیں۔ ایکسپورٹ ، کمیشن ، وغیرہ ملا کر اسی ہزار پر پہنچ جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ ان لوگوں نے این آر او کے لیے جتنی کوشش کرنی تھی کر لی ہے۔ ابھی میری عمران خان سے بات ہوئی تو عمران خان نے مجھ سے کہا کہ شیخ رشید جو کچھ ہوتا ہے ہو جائے کیونکہ میں نے ایک غلطی کی ہے ، میں نے عمران خان سے کہا کہ کہ دفع کرو ان کو جانے دو آپ ریلیکس حکومت گزاریں جس پر خان صاحب نے مجھ سے کہا کہ شیخ رشید دنیا ادھر سے اُدھر ہو جائے، جو کچھ ہونا ہے ہو جائے میں ان کو این آر او نہیں دوں گا۔

یہ عمران خان کا فیصلہ ہے۔ بجٹ کے بعد عمران خان کا یہی ارادہ ہے کہ پانچ ہزار ارب روپے کا کمیشن جو بنایا گیا ہے اس میں عمران خان نے دونوں سیاسی جماعتوں کو لیٹا دینا ہے۔ خیال رہے کہ اس سے قبل بھی پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید نے کہا تھا کہ میں نے عمران خان سے کہاہے کہ اگر یہ لوگ لندن جانا چاہتے ہیں تو ان کو جانے دیں ، ان کو اجازت دے دی جائے ، یہ لوگ لندن چلے جائیں اور آپ یہاں آرام سے اپنی حکومت کریں لیکن عمران خان کسی صورت اس بات پر آمادہ نہیں ہوتا۔ شیخ رشید کی اس بات سے سیاسی حلقوں میں چہ مگوئیاں بھی ہو رہی تھیں کہ شاید این آر او کی ڈیل فائنل ہو گئی ہے لیکن وزیراعظم عمران خان نے تمام افواہوں کی تردید کر دی تھی۔

Advertisement

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More

x

We use cookies to give you the best online experience. By agreeing you accept the use of cookies in accordance with our cookie policy.

I accept I decline Privacy Center Privacy Settings