Advertisement

اپوزیشن نے این آر اولینے کیلئے کون سا طریقہ استعمال کیا؟عمران خان نےاندر کی بات بتا دی

Advertisements

وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ اپوزیشن اے پی سی یا حکومت مخالف تحریک چلائے کسی صورت این ار او نہیں دوں گا۔ اپوزیشن کے احتجاج کی کوئی پرواہ نہیں حکومت اپوزیشن کے احتجاج کا جواب بہترین کارکردگی کی صورت میں دے گی ۔کرپشن کیسز پر کوئی سمجھوتا نہیں کروں گا۔ تفصیلات کے مطابق منگل کے روز وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدارت پارلیمانی پارٹی کا اجلاس پارلیمنٹ ہاؤس میں ہوا جس میں حکومتی اتحادی جماعتوں کے اراکین نے بھی شرکت کی۔

اجلاس میں آل پارٹیز کارنفرنس، پارلیمنٹ میں اپوزیشن کا رویہ ،معاشی صورتحال سمیت بجٹ پر غور خوص کیا گیا ۔اس موقع پر وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ حکومت نے معاشی سمت کا تعین کردیا ہے اور ملک بحران سے بھی آہستہ آہستہ نکل رہا ہے۔ اراکین اسمبلی معاشی بحران پر قابو پانے کیلئے ٹیکس بڑھانے پر پارلیمنٹ اور اپنے اپنے حلقوں میں عوام کیلئے آگاہی مہم چلائیں ۔اس کے علاوہ عمران خان نے آل پارٹیز کانفرنس پر اپنے رد عمل دیتے ہوئے کہا کہ اپوزیشن احتجاج کا شوق پورا کرلے حکومت کو اس کی کوئی پرواہ نہیں ہے ہم بہترین کارکردگی سے اپوزیشن کے احتجاج کا جواب دیں گے۔ اس کے علاوہ اراکین اسمبلی پارلیمنٹ میں عوام کو معاشی بحران کے ذمہ داروں سے بھی آگاہ کریں ۔وزیر اعظم نے مزید کہا کہ مجھے این آر او کیلئے براہ راست اپروچ نہیں کیا گیا ۔سب کو معلوم ہے کہ میں کرپشن کیسز پر کوئی سمجھوتا نہیں کروں گا ۔اب اپوزیشن اے پی سی کرے یا حکومت مخالف تحریک چلائے این آر او کسی صورت نہیں ملے گا۔اس کے علاوہ عمران خان نے اراکین اسمبلی کو ہدایت کی کہ بجٹ ایک قانونی تقاضہ ہے اور اراکین اسمبلی بجٹ سیشن میں حاضری کو یقنی بنائے انہوں نے مزید کہا کہ قبائلی اضلاع اور بلوچستان کے ترقیاتی فنڈز میں اضافہ کیا ہے لیکن پاک فوج نے فاٹا اور بلوچستان میں تنخواہوں میں اضافہ نہیں لیا۔

Advertisement

Source daily ausaf

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More

x

We use cookies to give you the best online experience. By agreeing you accept the use of cookies in accordance with our cookie policy.

I accept I decline Privacy Center Privacy Settings