Advertisement

ایمنسٹی اسکیم میں نقد رقم بینکوں میں رکھ کر رسید دکھانے کی شرط کا اصل مقصد کیا ہے؟وزیرخزانہ عبدالحفیظ شیخ نے وجہ بتادی

Advertisements

وفاقی وزیر برائے خزانہ امور عبدالحفیظ شیخ نے کہاہے کہ ایمنسٹی اسکیم میں نقد رقم بینکوں میں رکھ کر رسید دکھانے کی شرط کا مقصد سابقہ ایمنسٹی اسکیمز کی طرح لوگوں کی جانب سے اپنی مرضی کا رقم بتا کر مستقبل کی رقم کو وائٹ کرنے کا راستہ روکنا ہے،سابقہ ایمنسٹی اسکیم کے دوران لوگوں نے اپنے مرضی کے رقوم بتائے اور پھر مستقبل کیلئے انہیں وائٹ کیا،ہم چاہتے ہیں کہ جو رقم بینک میں جمع کرائی جائے تو اسے سب کو تسلی ہو کہ مذکورہ رقم کسی بھی شخص کے پاس موجو دہے اور وہ اسے

ایمنسٹی کے تحت وائٹ کرناچاہتاہے۔ان خیالات کااظہار انہوں نے گزشتہ روز نجی ٹی وی پروگرام ”پاکستان کیلئے کر ڈالو ”میں چیمبرآف کامرس اینڈانڈسٹری بلوچستان کے صدر جمعہ خان بادیزئی کے پوچھے گئے اس سوال کہ ایمنسٹی اسکیم سے مستفید ہونے کیلئے نقد رقم کی بینک اکاؤنٹ میں منتقلی اور اس کی رسید دکھانا کیوں لازمی قراردیاگیاہے؟ کاجواب دیتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر چیمبرآف کامرس کے صدر جمعہ خان بادیزئی،پیٹرن انچیف غلام فاروق خلجی،سینئر نائب صدر صلاح الدین خلجی ودیگر بھی موجود تھے۔چیمبرآف کامرس اینڈانڈسٹری بلوچستان کے صدر جمعہ خان بادیزئی نے نجی ٹی وی پروگرام ”پاکستان کیلئے کر ڈالو ”میں،وفاقی وزیر مملکت برائے ریونیو حماد اظہر اور چیئرمین فیڈرل بورڈآف ریونیو شبر زیدی سے سوالات کرتے ہوئے پوچھا کہ سابقہ ایمنسٹی اسکیمات کا تجربہ بتارہاہے کہ پہلے ایمنسٹی اسکیم کے تحت جن صنعت کاروں اور تجارت سے وابستہ افراد ودیگر نے اثاثے ڈکلیئر کئے انہیں بعد میں ری اڈٹ اور ایف بی آر کی جانب سے نوٹسز کے ذریعے تنگ کیاجاتارہا ہے اس کے علاوہ 30جون تک ایمنسٹی اسکیم کی مدت انتہائی کم ہے جس میں اضافہ کرنے کی ضرورت ہے کیونکہ یہ ملک بھر کی صنعت وتجارت سے وابستہ افراد اوردیگر کامطالبہ ہے،

انہوں نے آرڈیننس کے سیکشن 161کے تحت ودہولڈنگ ٹیکس کے اڈٹ کے نام پر ایف بی آر کو تنگ کرنے کا موقع دینے سے متعلق بھی سوال کیا۔ان سوالات کے جوابات دیتے ہوئے وفاقی وزیر مملکت برائے ریونیو حماد اظہر اور چیئر مین فیڈرل بورڈ آف ریونیو(ایف بی آر)شبر زیدی نے چیمبر آف کامرس کوئٹہ بلوچستان کے صدر جمعہ خان بادیزئی کی جانب سے میں پوچھے گئے سوالات کے جواب میں کہا کہ صنعت و تجارت اور دیگر سے وابستہ پاکستانیوں کے لئے اپنے اثاثہ جات کو ڈکلیئر کرنے کا سنہرا موقع ہے ہماری کوشش ہے کہ لوگوں میں اس حوالے سے اعتماد سازی کو فروغ دیا جا سکےصنعتکار اور تاجر ہوں یا کوئی اور ایمنسٹی کے موقع سے فائدہ اٹھاتے ہوئے کترانے سے گریز کریں اگر کسی نے گزشتہ دور حکومت میں دی جانے والی ایمنسٹی اسکیم کے تحت اپنے اثاثہ جات ڈیکلیئر کئے ہیں انہیں پریشان ہونے کی کوئی ضرورت نہیں بلکہ وہ صرف ایک ہے سطر میں ایف بی آر و دیگر کو بتا دیں کہ وہ اپنے اثاثہ جات ڈکلیئر کر چکے ہیں جس کے بعد اسے تنگ نہیں کیا جائے گا انہوں نے کہا کہ کیش رقم کو بنک میں رکھنا ضروری نہیں بلکہ گزشتہ اسکیم کے تحت بہت سے لوگوں نے مستقبل کے سرمایہ کو وائیٹ کیا تھا

انہوں نے کہا کہ ایمنسٹی اسکیم کی مقررہ وقت میں توسیع نہیں کیا جائے گا کیونکہ ایسا ان کے لئے ممکن ہی نہیں البتہ ہفتہ اور اتوار کو ایف بی آر آفسز اور اسٹیٹ بنک کی برانچز بدستور کھلی رہیں گی۔

Advertisement

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More

x

We use cookies to give you the best online experience. By agreeing you accept the use of cookies in accordance with our cookie policy.

I accept I decline Privacy Center Privacy Settings