Advertisement

احتساب عدالت نے فریال تالپور کو چودہ روزہ جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے کر دیا نیب علیمہ بی بی کے بارے میں کیا کر رہا ہے؟پیپلز پارٹی حکومت پر برس پڑی ، بڑا اعلان کر دیا

Advertisements

اسلام آباد احتساب عدالت نے سابق صدر آصف علی زرداری کی ہمشیرہ اور رکن سندھ اسمبلی فریال تالپور کو 14روزہ جسمانی ریمانڈ پر قومی احتساب بیورو(نیب)راولپنڈی کے حوالے کردیاہے۔پیر کوسابق صدر آصف علی زرداری کی ہمشیرہ فریال تالپور کو احتساب عدالت میں پیش کیا گیا عدالت نے 15 جون کو فریال تالپور کومبینہ منی لانڈرنگ کیس میں 9 روزہ جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے کیا تھا۔فریال تالپور کے وکیل سردار لطیف کھوسہ نے اپنے دلائل میں کہا کہ نیب علیمہ بی بی کے بارے میں کیا کر رہا ہے؟نیب کا احتساب کا عمل شفاف ہوتا

تو علیمہ بی بی کو بھی نوٹس جاری کرتا۔اسی دوران فریال تالپور روسٹرم پر آگئیں اور عدالت کو مخاطب کرکے کہا کہ انکا بلڈ پریشر ہائی رہتا ہے شوگر کی بھی مریض ہیں۔اس پر احتساب عدالت کے جج نے کہاکہ آپ کا بلڈ پریشر 150/180ہے آپ اپنی نشست پر بیٹھ جائیں۔لطیف کھوسہ نے اپنے دلائل جاری رکھتے ہوئے کہا کہ پارک لین کیس میں فریال تالپور کا کوئی کردار نہیں ہے۔ فریال تالپور پارک لین کمپنی کی ڈائریکٹر نہیں ہیں،یہ اومنی گروپ کے جعلی اکائونٹس کا کیس ہے، جعلی اکاونٹس کا زمینوں اور شوگر ملز سے کیا تعلق ہے؟سردار لطیف کھوسہ نے کہا کہ نیب والے کیس کی کھچڑی بنارہے ہیں ،چوں چوں کا مربہ بنا رہے ہیں۔تفتیشی افسر علی ابڑو نے کہا کہ شوگر کین کے معاملات پر فریال تالپور کے موقف کو چیک کر رہے ہیں۔لطیف کھوسہ نے کہا کہ ہم پر تو ہمیشہ سے کیسز بنتے رہے ہیں یہاں تک ہماری خواتین قیادت کوبھی کیسز کا سامنا رہاہے۔ انہوںنے کہاکہ بی بی شہید پر بھی کیسز بنائے گئے، کر لیں جتنا ظلم کرنا ہے ،ہم نے پہلے بیس سال بھی کیسز کو بھگتا ہے۔نیب پراسیکوٹر نے کہا کہ گنے کی سپلائی کے ریکارڈ سے متعلق دستاویزات پر فریال تالپور کا ورڑن درکار ہے اسی لیے مزید ریمانڈ درکار ہے۔فریال تالپور کے وکیل فاروق ایچ نائیک نے کہا کہ انکی موکلہ کو جعلی اکاؤنٹس کیس میں گرفتار کیا گیا ہے، اس سے زمینوں کا کیا تعلق؟ یہ چوں چوں کا مربعہ بنا رہے ہیں۔تفتیشی افسر نے کہا کہ وہ سمجھنے کی کوشش کر رہے ہیں کہ گنے ان شوگر ملوں کو بیچے گئے؟

فریال تالپور نے بتایا کہ جو پیسے آتے تھے وہ گنوں کی قیمت کی مد میں آتے تھے۔ ہم اس بیان کی تصدیق کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔عدالت نے دلائل مکمل ہونے پرنیب کی طرف سے فریال تالپور کے مزید ریمانڈ کی استدعا منظور کرتے ہوئے 14دن کے ریمانڈ پر نیب کے حوالے کر دیا۔عدالت نے کہاکہ ریمانڈ ختم ہونے پر فریال تالپور کو دوبارہ عدالت میں پیش کیاجائے ۔

Advertisement

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More

x

We use cookies to give you the best online experience. By agreeing you accept the use of cookies in accordance with our cookie policy.

I accept I decline Privacy Center Privacy Settings