Advertisement

مارننگ شو میں آئی اس خاتون نے ورزش کے ایسے شرمناک طریقے بتائے کہ سوشل میڈیا پر ہنگامہ برپا کر دیا، ویڈیو وائرل ہوتے ہی پاکستانی غصے سے آگ بگولہ ہو گئے

Advertisements

مارننگ شو وقت کے مطابق اس قدر ’جدید‘ ہو چکے ہیں کہ اخلاقیات کی حدیں بھی بھول گئے ہیں اور آئے روز مارننگ شوز میں کچھ نہ کچھ ایسا متنازعہ کام کر دیا جاتا ہے کہ پاکستانیوں کے غصے کی انتہاءنہیں رہتی اور اسی وجہ سے کئی مرتبہ مارننگ شوز کے متعدد میزبانوں پر پابندیاں بھی عائد ہو چکی ہیں۔ اس مرتبہ مارننگ شو میں ورزش کے نام پر جو کچھ کیا گیا ہے وہ آپ نے پہلے کبھی نہ دیکھا ہو گا!! اب آپ یہ سوچ رہے ہوں گے کہ کوئی ورزش بھلا کیسے شرمناک ہو سکتی ہے تو سمجھنے کیلئے آپ کو ذیل میں دی گئی ویڈیو دیکھنے کی ضرورت ہے جسے دیکھتے ہی آپ یقینا ہکا بکا رہ جائیں گے۔ جی ہاں!!! اب تو آپ کو یہ اندازہ ہو ہی چکا ہو گا کہ کیوں اس خاتون کی جانب سے بتائی گئی ورزشیں شرمناک ہیں۔۔۔ ”سرکولر، راﺅنڈ، گول ،گول،گول، گول مال ہے بھئی سب گول مال ہے۔“ خاتون نے جو کچھ بتایا وہ سمجھ تو نہیں آیا اسی لئے یہ سب کچھ لکھ دیا۔ اگرچہ یہ ویڈیو پرانی ہے لیکن ایک مرتبہ پھر سوشل میڈیا پر وائرل ہو رہی ہے اور پاکستانی اس خاتون کیساتھ ساتھ مارننگ شو اور اس کی میزبان کو بھی خوب آڑے ہاتھوں لے رہے ہیں۔

ایک صارف مینا آصف نے لکھا ”جب ہم میڈیا پر اس طرح کے پروگرام کرتے ہیں تو پھر ہم پریشانیوں پر روتے کیوں ہیں اور یہ کیوں کہتے ہیں کہ اللہ ہماری مدد کرے۔ تمام گھٹیا اور فحش پروگرام کیلئے ہم سب ذمہ دار ہیں۔ ایک مسلمان ہونے کی حیثیت سے اللہ سبحان و تعالیٰ کا سامنا کیسے کریں گے؟“

عائشہ رحمان نے لکھا ”مجھے یہ سمجھ نہیں آتی کہ میڈیا ایسے پروگرام کیوں دکھاتا ہے۔ عورتوں کو شرم نہیں آتی۔ کم بختوں کو یہ بھی احساس نہیں ہوتا کہ وہ جو کچھ کر رہی ہیں لوگ بھی وہی کچھ کریں گے۔ انہیں یہ احساس نہیں ہوتا کہ ایسے کپڑے پہن کر اور ایسے کام کر کے یہ غلط راستے پر جا رہی ہیں اور ان لوگوں کے گناہ بھی اپنے سر لے رہی ہیں جو انہیں دیکھ کر یہی کچھ کریں گے۔ اللہ تعالیٰ ان سب کو ہدایت دے“

عائشہ رحمان نے لکھا ”مجھے یہ سمجھ نہیں آتی کہ میڈیا ایسے پروگرام کیوں دکھاتا ہے۔ عورتوں کو شرم نہیں آتی۔ کم بختوں کو یہ بھی احساس نہیں ہوتا کہ وہ جو کچھ کر رہی ہیں لوگ بھی وہی کچھ کریں گے۔ انہیں یہ احساس نہیں ہوتا کہ ایسے کپڑے پہن کر اور ایسے کام کر کے یہ غلط راستے پر جا رہی ہیں اور ان لوگوں کے گناہ بھی اپنے سر لے رہی ہیں جو انہیں دیکھ کر یہی کچھ کریں گے۔ اللہ تعالیٰ ان سب کو ہدایت دے“

سہیل ملک نے لکھا ”ورزش کے نام پر انتہائی گھٹیا ڈانس۔۔۔ بہت ہی زیادہ قابل اعتراض طریقہ ہے۔ اس طرح کی بکواس دکھانے والے پرائیویٹ چینلز کو بند ہونا چاہئے“

Advertisement

Source DailyPakistan.com.pk
x

We use cookies to give you the best online experience. By agreeing you accept the use of cookies in accordance with our cookie policy.

I accept I decline Privacy Center Privacy Settings