Advertisement

فیصل آباد میں نوجوان لڑکی یونیورسٹی کیلئے گئی لیکن دیر رات تک گھر نہ آئی اور اس کے لڑکی کی لاش ایسی حالت میں ملی کہ اہل خانہ کے پیروں تلے زمین نکل گئی پوری قوم کے سر شرم سے جھک گئے

Advertisements

فیصل آباد میں ایم اے انگلش اور جی سی یونیورسٹی کی ہونہار طالبہ کو مبینہ زیادتی کے بعد قتل کردیا گیا،اغوا کے بعد ورثا کے کہنے پر کارروائی نہ کرنے اور غفلت برتنے پر ایس ایچ او گلبرگ کو معطل کر دیا گیا ،دوسری طرف سی پی او فیصل آباد کا کہنا ہے کہ کیس میں اہم پیش رفت ہوئی ہے ملزمان جلد ہی قانون کے شکنجے میں ہوں گے۔

تفصیلات کے مطابق پانچ روز قبل طالبہ کے گھر نہ لوٹنے کے بعد اہلخانہ نے پولیس میں رپورٹ درج کروائی تاہم مسلسل تلاش کرنے کے باوجود اس کا پتہ نہ چل سکا تاہم گزشتہ روز ایک لڑکی کی لاش ڈجکوٹ سے ملی تھی جس کی شناخت کے بعد پتہ چلا یہ وہی گمشدہ ہونے والی لڑکی ہے۔ابتدائی پوسٹ مارٹم رپورٹ میں لڑکی کے ساتھ زیادتی اور جسم پر تشدد کے شواہد ملے ہیں۔لڑکی کے اہلخانہ کے مطابق واقعے کے فوری بعد پولیس سے رابطہ کیا گیا تھا لیکن کوئی شنوائی نہیں ہوئی ،سی پی او اطہر سہیل کا کہنا ہے کہ اس واقعے میں کارروائی نہ کرنے پر تھانہ گلبرگ کے ایس ایچ او کو معطل کیا جاچکا ہے ۔سی پی اوجڑانوالہ کا متاثرہ خاندان کے گھر پرمیڈیا سے گفتگو میں کہنا تھا کہ کیس میں اہم پیش رفت ہوئی ہے جلد ملزمان کو گرفتار کر لیں گے۔انہوں نے کہا کہ اس کیس کی تحقیقات کے لئے دو الگ الگ ٹیمیں تشکیل دے دی گئی ہیں اور شام تک وزیرا علی پنجاب کو رپورٹ بھی ارسال کر دی جائے گی۔

تفصیلات کے مطابق پانچ روز قبل طالبہ کے گھر نہ لوٹنے کے بعد اہلخانہ نے پولیس میں رپورٹ درج کروائی تاہم مسلسل تلاش کرنے کے باوجود اس کا پتہ نہ چل سکا تاہم گزشتہ روز ایک لڑکی کی لاش ڈجکوٹ سے ملی تھی جس کی شناخت کے بعد پتہ چلا یہ وہی گمشدہ ہونے والی لڑکی ہے۔ابتدائی پوسٹ مارٹم رپورٹ میں لڑکی کے ساتھ زیادتی اور جسم پر تشدد کے شواہد ملے ہیں۔لڑکی کے اہلخانہ کے مطابق واقعے کے فوری بعد پولیس سے رابطہ کیا گیا تھا لیکن کوئی شنوائی نہیں ہوئی ،سی پی او اطہر سہیل کا کہنا ہے کہ اس واقعے میں کارروائی نہ کرنے پر تھانہ گلبرگ کے ایس ایچ او کو معطل کیا جاچکا ہے ۔سی پی اوجڑانوالہ کا متاثرہ خاندان کے گھر پرمیڈیا سے گفتگو میں کہنا تھا کہ کیس میں اہم پیش رفت ہوئی ہے جلد ملزمان کو گرفتار کر لیں گے۔انہوں نے کہا کہ اس کیس کی تحقیقات کے لئے دو الگ الگ ٹیمیں تشکیل دے دی گئی ہیں اور شام تک وزیرا علی پنجاب کو رپورٹ بھی ارسال کر دی جائے گی۔ تفصیلات کے مطابق پانچ روز قبل طالبہ کے گھر نہ لوٹنے کے بعد اہلخانہ نے پولیس میں رپورٹ درج کروائی تاہم مسلسل تلاش کرنے کے باوجود اس کا پتہ نہ چل سکا تاہم گزشتہ روز ایک لڑکی کی لاش ڈجکوٹ سے ملی تھی جس کی شناخت کے بعد پتہ چلا یہ وہی گمشدہ ہونے والی لڑکی ہے۔ابتدائی پوسٹ مارٹم رپورٹ میں لڑکی کے ساتھ زیادتی اور جسم پر تشدد کے شواہد ملے ہیں۔لڑکی کے اہلخانہ کے مطابق واقعے کے فوری بعد پولیس سے رابطہ کیا گیا تھا لیکن کوئی شنوائی نہیں ہوئی ،سی پی او اطہر سہیل کا کہنا ہے کہ اس واقعے میں کارروائی نہ کرنے پر تھانہ گلبرگ کے ایس ایچ او کو معطل کیا جاچکا ہے ۔سی پی اوجڑانوالہ کا متاثرہ خاندان کے گھر پرمیڈیا سے گفتگو میں کہنا تھا کہ کیس میں اہم پیش رفت ہوئی ہے جلد ملزمان کو گرفتار کر لیں گے۔انہوں نے کہا کہ اس کیس کی تحقیقات کے لئے دو الگ الگ ٹیمیں تشکیل دے دی گئی ہیں اور شام تک وزیرا علی پنجاب کو رپورٹ بھی ارسال کر دی جائے گی۔

Advertisement

Source DailyPakistan.com.pk
x

We use cookies to give you the best online experience. By agreeing you accept the use of cookies in accordance with our cookie policy.

I accept I decline Privacy Center Privacy Settings