اپنی بیٹیوں کو سکول لیجانے کے لیے روزانہ 12 کلومیٹر کا سفر پیدل طے کرنے والا دنیا کا سب سے بہترین باپ

4

افغانستان کے ایک شخص کی ویڈیو حال ہی میں سوشل میڈیا پر بہت وائرل ہوئی تھی جوخود تو ان پڑھ اور دل کا مریض تھا لیکن اس کے باوجود وہ اپنی دو بیٹیوں تعلیم کے زیور سے آراستہ کرنے کے لیے انہیں روزانہ 12کلومیٹر دور پیدل سکول لیجاتا تھااور چھٹی تک سکول کے باہر ہی بیٹھا رہتا اور پھر بیٹیوں کو لے کر شام تک اپنے گاﺅں پہنچ جاتا۔ اب افغان حکومت نے اس باہمت باپ کو ایک بڑا اعزاز دینے کا اعلان کر دیا ہے۔

ساﺅتھ چائنہ مارننگ پوسٹ کے مطابق افغان حکومت نے کہا ہے کہ 63سالہ میا خان نامی اس شخص کے گاﺅں میں ایک گرل سکول قائم کیا جائے گا اور اس سکول کو میا خان کا نام دیا جائے گا۔ رپورٹ کے مطابق میا خان افغان صوبے پکتیکا کے گاﺅں شیرانا کا رہائشی ہے۔ اس علاقے میں جو واحد گرل سکول ہے وہ شیرانا سے 12کلومیٹر دور ہے۔ افغان وزارت تعلیم نے میا خان کو ’ہیرو آف ایجوکیشن‘ کا خطاب دیا ہے اور اسے ایک ایوارڈ سے نوازا ہے۔ میا خان نے یہ جرات مندانہ کام ایک ایسے معاشرے میں کیا جہاں خواتین کو پڑھانے کی روایت نہ ہونے کے برابر ہے۔ اقوام متحدہ کے مطابق اس وقت 37لاکھ افغان بچے سکول نہیں جاتے اور ان میں 60فیصد سے زائد لڑکیاں ہیں۔