Advertisement

2 نئی ٹرینیں 20 دنوں میں تیار نہیں ہوئیں ،سب کچھ پہلے سے موجود تھا!

Advertisements

سابق وفاقی وزیرریلوے خواجہ سعد رفیق نے وفاقی وزیرریلوے شیخ رشید کا جھوٹا بیان پکڑ لیا، خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ 2 نئی مسافر ٹرینیں 20 دنوں میں تیار نہیں ہوئیں، بولان میل کیلئے ٹریک پہلے سے اپ گریڈ تھا،دونوں ٹرینیں ریلوے کے خسارے میں سالانہ 20 کروڑ اضافہ کریں گی،65سالہ افرادکیلئے آدھا ٹکٹ میرے دور میں کیا گیا تھا۔انہوں نے وفاقی وزیرریلوے شیخ رشید کے راولپنڈی

تا میانوالی ٹرین چلانے پراپنے ردعمل میں کہا کہ وزیرریلوے شیخ رشید مسلسل غلط بیانی سے کام لے رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ 2 نئی مسافر ٹرینیں صرف 20 دنوں میں تیار نہیں ہوئیں، بولان ایکسپریس کیلئے ٹریک پہلے سے اپ گریڈ کیے گئے تھے۔ دونوں ٹرینیں ریلوے کے خسارے میں سالانہ 20 کروڑ اضافہ کریں گی۔دونوں ٹرینیں منصوبہ بندی کے بغیرکارروائی ڈالنے کیلئے چلائی گئیں۔ میانوالی پنڈی کے درمیان ٹرین چلانے سے پہلے ٹریک ٹھیک کرنا لازمی تھا۔ انہوں نے کہا کہ 65 سال سے زائد عمر افراد کوآدھے ٹکٹ کی سہولت میرے دورسے حاصل ہے۔ ریلوے خسارہ ایک دویا تین برس میں ختم نہیں ہوسکتا۔ احمقانہ باتیں کرنے کے بجائے مالی حالت مرحلہ واربہتربنانے کی کوشش کی جائے۔ریلوے کی زمینیں بیچ دینے سے خسارہ ختم نہیں ہوگا۔ ریلوے کے بہترمستقبل کیلئے حکومت کوتجاویزدیں گے۔ تجاویزکو پبلک کیا جائے گا۔ واضح رہے وزیراعظم عمران خان نے گزشتہ روز راولپنڈی تا میانوالی ٹرین کا افتتاح کیا ہے۔ عمران خان نے کہا کہ شیخ رشید نے انتہائی کم وقت میں تہلکہ مچا دیا ہے۔ انہوں نے شیخ رشید کی تعریف بھی کی۔ جبکہ شیخ رشید نے کہا کہ 75 سال تک کے بزرگ شہریوں

کو ریلوے میں مفت سفر جبکہ 65 سال کی عمر کے حامل شہریوں کو 50 فیصد رعایت کی سہولت حاصل ہوگی۔انہوں نے کہا کہ ایران تک ہم سات ٹرینیں لے کر جانے کا ارادہ رکھتے ہیں، ٹریک کی حالت بہت خراب ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس وقت ریلوے کا خسارہ 40 سے 42 ارب روپے ہے، ایک سال میں یہ خسارہ ختم کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے ڈیم فنڈ میں 10 کروڑ روپے سالانہ دینے کے لئے ریلوے کے اکانومی ٹکٹ پر ایک روپے جبکہ بزنس کلاس پر 10 روپے کرایہ بڑھایا تو لوگ اس پر سیخ پا ہو گئے۔ انہوں نے بتایا کہ ہمیں مال برداری کے لئے سات سے آٹھ ٹرینیں ملی ہیں تاہم 100 دنوں میں 12 سے 15 ٹرینیں مال برداری کے لئے فعال کریں گے۔سابق وفاقی وزیرریلوے خواجہ سعد رفیق نے وفاقی وزیرریلوے شیخ رشید کا جھوٹا بیان پکڑ لیا، خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ 2 نئی مسافر ٹرینیں 20 دنوں میں تیار نہیں ہوئیں، بولان میل کیلئے ٹریک پہلے سے اپ گریڈ تھا،دونوں ٹرینیں ریلوے کے خسارے میں سالانہ 20 کروڑ اضافہ کریں گی،65سالہ افرادکیلئے آدھا ٹکٹ میرے دور میں کیا گیا تھا۔انہوں نے وفاقی وزیرریلوے شیخ رشید کے راولپنڈی تا میانوالی ٹرین چلانے پراپنے ردعمل میں کہا

کہ وزیرریلوے شیخ رشید مسلسل غلط بیانی سے کام لے رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ 2 نئی مسافر ٹرینیں صرف 20 دنوں میں تیار نہیں ہوئیں، بولان ایکسپریس کیلئے ٹریک پہلے سے اپ گریڈ کیے گئے تھے۔ دونوں ٹرینیں ریلوے کے خسارے میں سالانہ 20 کروڑ اضافہ کریں گی۔دونوں ٹرینیں منصوبہ بندی کے بغیرکارروائی ڈالنے کیلئے چلائی گئیں۔ میانوالی پنڈی کے درمیان ٹرین چلانے سے پہلے ٹریک ٹھیک کرنا لازمی تھا۔ انہوں نے کہا کہ 65 سال سے زائد عمر افراد کوآدھے ٹکٹ کی سہولت میرے دورسے حاصل ہے۔ ریلوے خسارہ ایک دویا تین برس میں ختم نہیں ہوسکتا۔ احمقانہ باتیں کرنے کے بجائے مالی حالت مرحلہ واربہتربنانے کی کوشش کی جائے۔ریلوے کی زمینیں بیچ دینے سے خسارہ ختم نہیں ہوگا۔ ریلوے کے بہترمستقبل کیلئے حکومت کوتجاویزدیں گے۔ تجاویزکو پبلک کیا جائے گا۔ واضح رہے وزیراعظم عمران خان نے گزشتہ روز راولپنڈی تا میانوالی ٹرین کا افتتاح کیا ہے۔ عمران خان نے کہا کہ شیخ رشید نے انتہائی کم وقت میں تہلکہ مچا دیا ہے۔ انہوں نے شیخ رشید کی تعریف بھی کی۔ جبکہ شیخ رشید نے کہا کہ 75 سال تک کے بزرگ شہریوں کو ریلوے میں مفت سفر جبکہ 65 سال کی عمر کے حامل شہریوں

کو 50 فیصد رعایت کی سہولت حاصل ہوگی۔انہوں نے کہا کہ ایران تک ہم سات ٹرینیں لے کر جانے کا ارادہ رکھتے ہیں، ٹریک کی حالت بہت خراب ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس وقت ریلوے کا خسارہ 40 سے 42 ارب روپے ہے، ایک سال میں یہ خسارہ ختم کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے ڈیم فنڈ میں 10 کروڑ روپے سالانہ دینے کے لئے ریلوے کے اکانومی ٹکٹ پر ایک روپے جبکہ بزنس کلاس پر 10 روپے کرایہ بڑھایا تو لوگ اس پر سیخ پا ہو گئے۔ انہوں نے بتایا کہ ہمیں مال برداری کے لئے سات سے آٹھ ٹرینیں ملی ہیں تاہم 100 دنوں میں 12 سے 15 ٹرینیں مال برداری کے لئے فعال کریں گے۔

Advertisement

x

We use cookies to give you the best online experience. By agreeing you accept the use of cookies in accordance with our cookie policy.

I accept I decline Privacy Center Privacy Settings