Advertisement

کوئٹہ کے بعد ایک اور شہر کو دہشت گردوں کی جانب سے نشانہ بنائے جانے کا خدشہ، ہائی الرٹ جاری

Advertisements

انسپکٹر جنرل سندھ پولیس ڈاکٹر سیدکلیم امام نے کہاہے کہ کوئٹہ دھماکے کے بعد کراچی میں سیکیورٹی سخت کردی ہے، شہر کے 77 مقامات کے لیے دہشتگردی کا خدشہ موجود ہے۔جمعہ کومیڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے آئی جی سندھ نے کہا کہ کچھ مشکلات کا سامنا ہے جنہیں دور کیا جا رہا ہے، کراچی کا شہری ہوں اور عزیز آباد میں رہتا تھا۔

انہوں نے کہاکہ سال1980میں کرکٹ کھیلتا تھا بہت اچھا ماحول تھا، پتہ ہی نہیں چلا کب نوجوانوں کے ہاتھ میں بلے کی جگہ ہتھیار آگئے، یہ میرا شہر ہے مجھے یہاں کے حالات کی فکر ہے۔انہوں نے کہا کہ مفتی تقی عثمانی کیس میں اہم کڑی ملی ہے، جلد آگاہ کیا جائے گا۔ کوئٹہ میں واقعہ ہوا ہے، کراچی میں بھی 77تھریٹ الرٹ موجود ہیں۔ کوئٹہ واقعے کے تناظر میں کراچی میں سیکیورٹی سخت کردی ہے۔

آئی جی سندھ نے کہاکہ ٹارگٹڈ آپریشن کے بعد کراچی میں پولیس کی شہادتوں میں کمی ہوئی، غفار ذکری اور دیگر گینگز کا خاتمہ کیا جو بڑی کامیابی ہیں۔جوڑیابازار میں تاجر کے قتل کی تحقیقات ہو رہی ہے۔ بھتے کی وارداتیں یا قتل کی کارروائیاں بہت ہوئیں۔انہوں نے کہا کہ ادارہ چلانے کے لیے رولز کی ضرورت ہوتی ہے، 22 اگست واقعے کی تحقیقات اختتامی مراحل میں ہیں۔ کسی کو شہر میں ایسا کرنے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔

بریکنگ نیوز! چمن میں دھماکہ ،جانی نقصان

بلوچستان دہشت گردوں کے نشانے پر، چمن میں دھماکہ، ایک شخص جاں بحق، 4 زخمی۔ تفصیلات کے مطابق بلوچستان کے شہر چمن سے تشویش ناک خبر موصول ہوئی ہے۔ بلوچستان دہشت گردوں کے نشانے پر ہے۔ ایک ہی روز میں بلوچستان میں دوسرا دھماکہ ہوا ہے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق بلوچستان کے شہر چمن کی مشہور مال روڈ پر دھماکہ ہوا ہے۔

دھماکہ موٹر سائیکل پر نصب ریموت کنٹرول بم کے ذریعے کیا گیا۔ دھماکے کے نتیجے میں ایک شخص کے جاں بحق ہونے اور 4 کے زخمی ہونے کی اطلاعات ہیں۔

بتایا جا رہا ہے کہ دھماکہ اس وقت کیا گیا جب علاقے سے سیکورٹی فورسز کا قافلہ گزر رہا تھا۔ دھماکے کے ذریعے سیکورٹی فورسز کے قافلے کو نشانہ بنانے کی کوشش کی گئی۔ تاہم سیکورٹی فورسز کے کسی اہلکار کے نشانہ بننے یا نہ بننے کے حوالے سے تاحال معلومات موصول نہیں ہوئیں۔

سیکورٹی فورسز نے علاقے کو گھیرے میں لے لیا ہے، جبکہ ریسکیو ٹیمیں بھی جائے وقوعہ پر پہنچ چکی ہیں۔ زخمیوں کو ابتدائی طبی امداد دے کر ہسپتال منتقل کیا جا رہا ہے۔ واضح رہے کہ اس سے قبل جمعہ کی صبح کو بلوچستان کے دارالحکومت کوئٹہ میں دھماکہ ہوا تھا۔ کوئٹہ میں ہونے والے دھماکے میں 16 افراد شہید ہوئے۔

Advertisement

x

We use cookies to give you the best online experience. By agreeing you accept the use of cookies in accordance with our cookie policy.

I accept I decline Privacy Center Privacy Settings