Advertisement

کلبھوشن تو یہاں اپنی بہن کے ولیمے پر آیا تھا ناں“ شاہد آفریدی کے بعد شعیب اختر نے بھی ”باﺅنسر“ دے مارا، ایسی بات کہہ دی کہ بھارتیوں کو لگی مرچوں میں مزید اضافہ ہو گیا

Advertisements

شاہد خان آفریدی کی صرف ایک ٹویٹ نے پورے بھارت کو ہلا کر رکھ دیا اور ہر کوئی ان کیخلاف ردعمل دینے کیلئے میدان میں آ رہا ہے۔ بھارتیوں کی جانب سے شاہد آفریدی کیخلاف زہر اگلا گیا تو احمد شہزاد لالہ کے دفاع کیلئے میدان میں آئے اور اب شعیب اختر نے بھی ”باﺅنسر“ دے مارا ہے اور ایسی بات کہہ دی ہے کہ بھارتیوں کو لگی مرچوں میں خوب اضافہ ہو گیا ہے۔

شاہد خان آفریدی کی صرف ایک ٹویٹ نے پورے بھارت کو ہلا کر رکھ دیا اور ہر کوئی ان کیخلاف ردعمل دینے کیلئے میدان میں آ رہا ہے۔ بھارتیوں کی جانب سے شاہد آفریدی کیخلاف زہر اگلا گیا تو احمد شہزاد لالہ کے دفاع کیلئے میدان میں آئے اور اب شعیب اختر نے بھی ”باﺅنسر“ دے مارا ہے اور ایسی بات کہہ دی ہے کہ بھارتیوں کو لگی مرچوں میں خوب اضافہ ہو گیا ہے۔شعیب اختر نے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر جاری اپنے پیغام میں لکھا ”دونوں طرف کی نوجوان نسل کو پاکستان اور بھارت کے تعلقات کیلئے کھڑا ہونے اور حکام سے ایک صحیح اور سچا سوال کرنے کی ضرورت ہے کہ ہم گزشتہ 70 سالوں میں اپنے زیر التواءمسائل کو حل نہیں کر سکے۔۔۔ میں آپ سے پوچھتا ہوں کہ کیا آپ اس نفرت کیساتھ مزید 70 سال جینے کیلئے تیار ہیں۔۔۔“

شعیب اختر کی یہ ٹویٹ سامنے آئی تو بھارتیوں نے مثبت جواب دینے کے بجائے ایک مرتبہ پھر پاکستان پر الزام تراشی شروع کر دی اور پھر پاکستانی بھی کہاں پیچھے رہنے والے تھے۔

سبھا نارائن نامی صارف نے لکھا ”پاکستان کی حمایت یافتہ دہشت گردی بند ہو جائے گی تو سب ٹھیک ہو جائے گا“

مرزا راحیل نے لکھا ”کلبھوشن تو اپنی بیٹی کے ولیمے پر آیا تھا ناں۔۔۔ تم جو لوگ مقبوضہ کشمیر میں کر رہے ہو وہ دہشت گردی ہے“

آنندا سرکار نے لکھا ”کلبھوشن سب سے بڑا ڈرامہ ہے جو ہم نے دیکھا۔ کوئی شک نہیں کہ کلبھوشن گرفتار ہوا۔۔۔ پیارے تم تو یہ بھی نہیں جانتے کہ بھارت کشمیر میں روزانہ پاکستانی دہشت گردوں کو پکڑتا ہے۔۔۔ گزشتہ روز بھی کشمیر پولیس نے ایک دہشت گرد گرفتار کیا جس کا تعلق ملتان سے ہے“

Advertisement

Source Dailypakistan.com.pk
x

We use cookies to give you the best online experience. By agreeing you accept the use of cookies in accordance with our cookie policy.

I accept I decline Privacy Center Privacy Settings