Advertisement

پیسا ہی پیسا

Advertisements

بڑے اور چھوٹے کی بحث ہم تقریباََ ہر روز کسی نہ کسی انداز میں سنتے ہیں۔ کوئی لمبے قد کی وجہ سے خود کو بڑا کہتا ہے ، کوئی مال و دولت کی بنیاد پر خود کو بڑا تصور کرتا ہے اور کثیر تعداد میں لوگ اپنی بڑی عمر کو مدنظر رکھتے ہوئے خود کو بڑا کہتے ہیں۔ مگر ہم سب میں سے بڑا ہے کون؟بچپن سے جوانی اور پھر جوانی سے بڑھاپے کا سفر گزر جاتا ہے مگر بہت سے لوگ اس بات کا جواب نہیں تلاش کر پاتے کہ وہ کس کس سے بڑے ہیں اور کس کس سے چھوٹے۔ اگر اس سوال کی گہرائی میں جایا جائے تو یہ بہت دلچسپ سوال ہے جس پر گھنٹوں بحث ہو سکتی ہے۔

مجھے بھی ہمیشہ یہ تجسس رہا ہے کہ میں کس کس سے بڑا ہوں اور کس سے چھوٹا۔ اگر کہیں عمر میں بڑے لوگوں سے سامنا ہو جائے تو احتراماََ ان کو بڑے ہونے کا رتبہ مل جاتا ہے۔ مگر دوسری جانب اگر اپنے سے کم عمر یا ہم عمر سے اس پر بات ہو جائے تو میں بھی خوب دھار یں مارنے کی کوشش کرتا ہوں کہ بھئی میں تم سے بڑا ہوں اور تم میرے سے چھوٹے۔بچپن سے جوانی تک اس بڑے پن کو محسوس کرنے کے پیمانے بھی تبدیل ہوتے رہتے ہیں۔ جیسا کہ میں بچپن میں اپنے لمبے قد کو اپنے دوستوں سے بڑے ہونے کی علامت کہتا تھا۔ جوں جوں عمر بڑھتی گئی اس طرح کی علامتوں اور وجوہات میں اضافہ ہوتا گیا۔ دھیرے دھیرے بات پڑھائی پہ گئی۔ تو دوسرا دوست سبقت لے گیا کہ” بھائی میرے نمبر سب سے اچھے آئے ہیں میں تم سب سے بڑا ہوں”۔ بڑھتی عمر کے ساتھ کچھ شوق انسان میں پیدا ہوتے ہیں تو وہیں کچھ شوق ختم بھی ہو جاتے ہیں۔ اسی طرح جب پڑھائی کا رعب ختم ہوتا ہے تو بڑاپن جتانے کی بات کچھ ظاہری چیزوں پر آجاتی ہے جیسا کہ کسی انسان کا رہن سہن، کھانا پینا، لائف سٹائل وغیرہ۔ اس کے بعد بڑھاپے کے بارے میں اتنا نہیں جانتا کیوں کہ ابھی میں خود جوانی کی عیش والی زندگی گزارنے میں مصروف ہوں۔

عمر برھنے کے ساتھ ساتھ انسان کو بہت سے تجربہ ہو جاتے ہیں۔ کچھ مثبت تو کچھ منفی۔ اکثر یہی تجربات انسان کو بدل بھی دیتے ہیں اور انسان کی سوچ بھی انہی تجربات کی بنیاد پر بنتی ہے۔ جوانی زندگی کا ایک ایسا حصہ ہوتا ہے جس میں انسان بہت کچھ سیکھتا ہے اور صحیح معنوں میں انسان بھی عمر کے اسی حصے میں بنتا ہے۔ بات ہو رہی تھی کہ دنیا میں بڑا کون ہے ؟ ہر انسان اپنے آپ کو دوسرے سے بڑا اور معتبر سمجھتا ہے۔ کس اعتبار سے سمجھتا ہے وہ ہر انسان کی اپنی سوچ ہے مگر بڑا کوئی بھی نہیں ہے۔

Advertisement

Source lkdmedia.com
x

We use cookies to give you the best online experience. By agreeing you accept the use of cookies in accordance with our cookie policy.

I accept I decline Privacy Center Privacy Settings