Advertisement

پاکستان کے قومی خزانے میں کھربوں روپے جمع کروا دیے گئے، وہ بھی کس کی جانب سے

Advertisements

چیئرمین نیب جسٹس (ر) جاوید اقبال نے کہا ہے کہ نیب نے 297 ارب روپے قومی خزانے میں جمع کروائے ہیں، کرپشن ملک کی ترقی میں بڑی رکاوٹ ہے، میگا کرپشن مقدمات کومنطقی انجام تک پہنچانا اولین ترجیح ہے۔ ان خیالات کااظہار انہوں نے نیب ہیڈ کوار ٹر میں نیب نیب کے علاقائی بیوروز کی ماہانہ کارکردگی سے متعلق جائزہ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔اجلاس کے دوران نیب کے تمام علاقائی بیوروز، پراسیکیوشن، آپریشن ڈویژن سمیت نیب ہیڈ کوارٹرز کے

تمام شعبوں کی کارکردگی کا تفصیلی جائزہ لیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ نوجوان پاکستان کا مستقبل ہیں۔ نیب اپنی حالیہ پالیسیوں میں نوجوانوں کواہمیت دیتا ہے۔ شفافیت میرٹ اور قانون پرعمل پیرا ہیں۔انہوں نے کہا کہ بدعنوانی ملک کی ترقی میں بڑی رکاوٹ ہے۔میگا کرپشن مقدمات کومنطقی انجام تک پہنچانا اولین ترجیح ہے۔ پاکستان کوکرپشن فری بنانا نیب کا عزم ہے۔انہوں نے کہا کہ ماہانہ، ششماہی اور سالانہ بنیادوں پرجائزہ لے رہا ہے۔ نیب نے لوٹی ہوئی دولت میں 297ارب روپے قومی خزانے میں جمع کروا دیے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ تمام مقدمات کو نمٹانے کیلئے شکایات کی جانچ پڑتال، انکوائریوں اور انوسٹی گیشنز کیلئے وقت کا تعین کیا گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ نوجوان پاکستان کا مستقبل ہیں، اس لئے نیب اپنی حالیہ پالیسی میں ان نوجوانوں کو اہمیت دیتا ہے تاکہ انہیں ابتدائی عمر میں ہر قسم کی بدعنوانی سے متعلق آگاہی دی جا سکے۔ نیب نے ملک بھر میں مختلف کالجوں اور یونیورسٹیوں میں 55 ہزار کردار سازی کی انجمنیں قائم کی ہیں جس کا مقصد نوجوانوں کوبدعنوانی کے مضر اثرات سے اگاہی فراہم کرنا ہے ۔انہوں نے کہا کہ نیب کے تمام علاقائی بیوروز کی کارکردگی کا ماہانہ، سہ ماہی ، ششماہی اور سالانہ بنیادوں پرجائزہ لیا جا رہا ہے اور تمام متعلقہ شعبوں کی مانیٹرنگ اور ایویلیوایشن کا نظام وضع کیا گیا ہے۔ چیئرمین نیب نے نیب کے تمام علاقائی بیوروز کی بدعنوانی کے خاتمہ کیلئے کوششوں کی تعریف کی اور ہدایت کی کہ وہ بدعنوان سے لوٹی گئی رقم وصول کرنے کیلئے اپنی کوششیں دوگنا کریں کیونکہ نیب ہر قیمت پر پاکستان کو بدعنوانی سے پاک بنانے کیلئے پرعزم ہے۔

چیئرمین نیب جسٹس (ر) جاوید اقبال نے کہا ہے کہ نیب نے 297 ارب روپے قومی خزانے میں جمع کروائے ہیں، کرپشن ملک کی ترقی میں بڑی رکاوٹ ہے، میگا کرپشن مقدمات کومنطقی انجام تک پہنچانا اولین ترجیح ہے۔ ان خیالات کااظہار انہوں نے نیب ہیڈ کوار ٹر میں نیب نیب کے علاقائی بیوروز کی ماہانہ کارکردگی سے متعلق جائزہ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔اجلاس کے دوران نیب کے تمام علاقائی بیوروز، پراسیکیوشن، آپریشن ڈویژن سمیت نیب ہیڈ کوارٹرز کے تمام شعبوں کی کارکردگی کا تفصیلی جائزہ لیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ نوجوان پاکستان کا مستقبل ہیں۔ نیب اپنی حالیہ پالیسیوں میں نوجوانوں کواہمیت دیتا ہے۔ شفافیت میرٹ اور قانون پرعمل پیرا ہیں۔انہوں نے کہا کہ بدعنوانی ملک کی ترقی میں بڑی رکاوٹ ہے۔میگا کرپشن مقدمات کومنطقی انجام تک پہنچانا اولین ترجیح ہے۔ پاکستان کوکرپشن فری بنانا نیب کا عزم ہے۔انہوں نے کہا کہ ماہانہ، ششماہی اور سالانہ بنیادوں پرجائزہ لے رہا ہے۔ نیب نے لوٹی ہوئی دولت میں 297ارب روپے قومی خزانے میں جمع کروا دیے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ تمام مقدمات کو نمٹانے کیلئے شکایات کی جانچ پڑتال، انکوائریوں اور انوسٹی گیشنز کیلئے وقت کا تعین کیا گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ نوجوان پاکستان کا مستقبل ہیں، اس لئے نیب اپنی حالیہ پالیسی میں ان نوجوانوں کو اہمیت دیتا ہے تاکہ انہیں ابتدائی عمر میں ہر قسم کی بدعنوانی سے متعلق آگاہی دی جا سکے۔ نیب نے ملک بھر میں مختلف کالجوں اور یونیورسٹیوں میں 55 ہزار کردار سازی کی انجمنیں قائم کی ہیں جس کا مقصد نوجوانوں کوبدعنوانی کے مضر اثرات سے اگاہی فراہم کرنا ہے ۔انہوں نے کہا کہ نیب کے تمام علاقائی بیوروز کی کارکردگی کا ماہانہ، سہ ماہی ، ششماہی اور سالانہ بنیادوں پرجائزہ لیا جا رہا ہے اور تمام متعلقہ شعبوں کی مانیٹرنگ اور ایویلیوایشن کا نظام وضع کیا گیا ہے۔ چیئرمین نیب نے نیب کے تمام علاقائی بیوروز کی بدعنوانی کے خاتمہ کیلئے کوششوں کی تعریف کی اور ہدایت کی کہ وہ بدعنوان سے لوٹی گئی رقم وصول کرنے کیلئے اپنی کوششیں دوگنا کریں کیونکہ نیب ہر قیمت پر پاکستان کو بدعنوانی سے پاک بنانے کیلئے پرعزم ہے۔

چیئرمین نیب جسٹس (ر) جاوید اقبال نے کہا ہے کہ نیب نے 297 ارب روپے قومی خزانے میں جمع کروائے ہیں، کرپشن ملک کی ترقی میں بڑی رکاوٹ ہے، میگا کرپشن مقدمات کومنطقی انجام تک پہنچانا اولین ترجیح ہے۔ ان خیالات کااظہار انہوں نے نیب ہیڈ کوار ٹر میں نیب نیب کے علاقائی بیوروز کی ماہانہ کارکردگی سے متعلق جائزہ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔اجلاس کے دوران نیب کے تمام علاقائی بیوروز، پراسیکیوشن، آپریشن ڈویژن سمیت نیب ہیڈ کوارٹرز کے تمام شعبوں کی کارکردگی کا تفصیلی جائزہ لیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ نوجوان پاکستان کا مستقبل ہیں۔ نیب اپنی حالیہ پالیسیوں میں نوجوانوں کواہمیت دیتا ہے۔ شفافیت میرٹ اور قانون پرعمل پیرا ہیں۔انہوں نے کہا کہ بدعنوانی ملک کی ترقی میں بڑی رکاوٹ ہے۔میگا کرپشن مقدمات کومنطقی انجام تک پہنچانا اولین ترجیح ہے۔ پاکستان کوکرپشن فری بنانا نیب کا عزم ہے۔انہوں نے کہا کہ ماہانہ، ششماہی اور سالانہ بنیادوں پرجائزہ لے رہا ہے۔ نیب نے لوٹی ہوئی دولت میں 297ارب روپے قومی خزانے میں جمع کروا دیے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ تمام مقدمات کو نمٹانے کیلئے شکایات کی جانچ پڑتال، انکوائریوں اور انوسٹی گیشنز کیلئے وقت کا تعین کیا گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ نوجوان پاکستان کا مستقبل ہیں، اس لئے نیب اپنی حالیہ پالیسی میں ان نوجوانوں کو اہمیت دیتا ہے تاکہ انہیں ابتدائی عمر میں ہر قسم کی بدعنوانی سے متعلق آگاہی دی جا سکے۔ نیب نے ملک بھر میں مختلف کالجوں اور یونیورسٹیوں میں 55 ہزار کردار سازی کی انجمنیں قائم کی ہیں جس کا مقصد نوجوانوں کوبدعنوانی کے مضر اثرات سے اگاہی فراہم کرنا ہے ۔انہوں نے کہا کہ نیب کے تمام علاقائی بیوروز کی کارکردگی کا ماہانہ، سہ ماہی ، ششماہی اور سالانہ بنیادوں پرجائزہ لیا جا رہا ہے اور تمام متعلقہ شعبوں کی مانیٹرنگ اور ایویلیوایشن کا نظام وضع کیا گیا ہے۔ چیئرمین نیب نے نیب کے تمام علاقائی بیوروز کی بدعنوانی کے خاتمہ کیلئے کوششوں کی تعریف کی اور ہدایت کی کہ وہ بدعنوان سے لوٹی گئی رقم وصول کرنے کیلئے اپنی کوششیں دوگنا کریں کیونکہ نیب ہر قیمت پر پاکستان کو بدعنوانی سے پاک بنانے کیلئے پرعزم ہے۔

Advertisement

x

We use cookies to give you the best online experience. By agreeing you accept the use of cookies in accordance with our cookie policy.

I accept I decline Privacy Center Privacy Settings