Advertisement

پاکستان کو ورلڈ کپ کھیلنے سے کوئی نہیں روک سکتا!! بھارتی کرکٹ بورڈنے ہار مان لی

Advertisements

پاکستان کرکٹ ٹیم کو ورلڈ کپ 2019 ءسے باہر کروانے کا مطالبہ کرنے والے بھارتی کرکٹ بورڈ (بی سی سی آئی )کی عقل ٹھکانے آگئی۔تفصیلات کے مطابق پاکستان کرکٹ ٹیم کو ورلڈ کپ 2019 ءسے باہر کروانے کا مطالبہ کرنے والے بی سی سی آئی کو اعتراف کرنا پڑا کہ وہ پاکستان کو ورلڈ کپ میں شرکت سے نہیں روک سکتا ہے ،آئینی طور پر ایسا نہیں کیا جاسکتا ہے۔

بی سی سی آئی کے ترجمان نے اعتراف کیا ہے کہ آئی سی سی کا قانون تمام ممبر بورڈز کو آئینی تحفظ فراہم کرتا ہے اور کوالیفائنگ ٹیموں کو آئی سی سی ایونٹس سے نہیں روکا جاسکتا ہے۔واضح رہے کہ بھارتی کرکٹ بورڈ نے ورلڈ کپ 2019 ءسے پاکستان کو باہر کرنے کے لیے آئی سی سی کو خط لکھا اور پھر خود ہی مان لیا کہ ایسا ممکن نہیں ہے۔ دوسری جانب سابق کپتان سارو گنگولی نے پاکستان کیخلاف ہرزہ سرائی کرتے ہوئے دعویٰ کیا بھارت نہیں ہوگا توورلڈ کپ بھی نہیں ہوسکتا۔

یاد رہے کہ ورلڈ کپ 30 مئی سے 14 جولائی تک انگلینڈ اور ویلز میں کھیلا جائے گا۔میزبان انگلینڈ اور جنوبی افریقہ ٹورنامنٹ کا پہلے میچ اوول کے میدان پر 30 مئی کو کھیلا جائے گا جبکہ پاکستان کا پہلا میچ ویسٹ انڈیز کے خلاف ہے جو 31 مئی کو ٹرینٹ برج پر کھیلا جائے گا۔واضح رہے کہ پلوامہ خودکش حملے میں 44 بھارتی فوجی مارے گئے تھے جس کے بعد بھارت نے پاکستان کے خلاف محاذ کھول دیاہے۔

قومی ٹیم کے نوجوان بلے باز بابراعظم کا کہنا ہے کہ بھارتی کپتان ویرات کوہلی کے ساتھ موازنہ کیے جانے پر فخر محسوس کرتا ہوں تاہم چاہتا ہوں کہ اتنی ہی مستقل مزاجی سے کھیلوں۔ایک انٹرویو میں نوجوان بیٹسمین بابر اعظم کا کہنا ہے کہ ویرات کوہلی کے ساتھ موازنہ کیے جانے پر فخر محسوس کرتا ہوں لیکن ان کی کارکردگی میں تسلسل اور وہ ذہنی طور پر بہت مضبوط پلیئر ہیں، بھارتی کپتان جب بھی بیٹنگ کیلئے آئیں تو 100 فیصد پرفارمنس دینے کی کوشش کرتے ہیں تاہم میرے کیریئر کا ابھی آغاز ہے اور اسی لیے میں چاہتا

ہوں کہ اتنی مستقل مزاجی سے کھیلوں کہ میری ہر پرفارمنس پاکستان ٹیم کی فتوحات میں اہم کردار ادا کرے۔
بابر اعظم نے کہا کہ بچپن میں ہی کرکٹ کا شوق پروان چڑھا، والد اور بڑے بھائی نے لگن کو دیکھتے ہوئے بھرپور حوصلہ افزائی کی، ٹیسٹ کرکٹرز کامران اکمل، عمر اکمل اور عدنان اکمل کے والد اور میرے چچا اکمل نے بھی نصیحت کی کہ اگر محنت کرو تو کرکٹ میں بڑا نام کماسکتے ہو، اپنی غلطیوں سے مسلسل سیکھنے کی کوشش کرتا ہوں، سینئرز اظہر علی اور اسد شفیق سے مشورہ بھی کرتا ہوں، ٹیسٹ کرکٹ میں بھی اپنی کارکردگی مزید بہتر بنانے کی خواہش ہے، طویل فارمیٹ میں مہارت، صبر اور فٹنس کا کڑا امتحان ہوتا ہے، تینوں فارمیٹس میں پاکستان کے لیے بہترین کارکردگی پیش کرنا چاہتا ہوں۔

یاد رہے کہ بابر اعظم کو ون ڈے کرکٹ میں ویرات کوہلی سے کم اننگز میں 1000اور2000رنز سکو ر کرنے کا اعزاز حاصل ہے جب کہ ٹی ٹونٹی کرکٹ میں بھی انہوں نے محض26اننگز میں1000رنز مکمل کرکے ویرات کوہلی کا عالمی ریکارڈ توڑا تھا، بابر اعظم نے اپنے پہلے25ون ڈے میچز میں5سنچریاں بنائیں جب کہ کوہلی اتنے میچز میں محض2سنچریاں بنا سکے تھے۔

Advertisement

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More

x

We use cookies to give you the best online experience. By agreeing you accept the use of cookies in accordance with our cookie policy.

I accept I decline Privacy Center Privacy Settings