Advertisement

وہ وقت جب وسیم اکرم اور وقار یونس کو ایک ساتھ گرفتار کر لیا گیا، کیا شرمناک ترین الزام لگایا گیا؟ وہ بات جو زیادہ تر پاکستانیوں کو معلوم نہیں

Advertisements

حالیہ کچھ عرصے میں پاکستان کے تین کھلاڑی ڈوپ ٹیسٹ مثبت آنے پر پابندی کا شکار ہو چکے ہیں لیکن ہماری کرکٹ میں یہ بیماری کچھ نئی نہیں ہے۔ آپ یہ سن کر حیران ہوں گے کہ 1993ءمیں ہماری کرکٹ ٹیم کے 4کھلاڑی جزائر غرب الہند کے ملک گریناڈا میں منشیات رکھنے کے الزام میں ایک ساتھ گرفتار ہو گئے۔ ان میں اس وقت کے

کپتان وسیم اکرم، نائب کپتان وقار یونس، عاقب جاوید اور مشتاق احمد شامل تھے۔ ان کے ساتھ دو خواتین سیاحوں اور ایک مقامی شخص کو بھی گرفتار کیا گیا تھا۔پاکستانی ٹیم کا ہوٹل ساحل کے قریب واقع تھا اور وہ گرفتاری کے وقت ساحل سمندر پر موجود تھے۔پولیس کے مطابق ان کے پاس سے چرس برآمد ہوئی۔بعد ازاں ان چاروں کو ضمانت پر رہا کر دیا گیا تھا۔ واضح رہے کہ یہ واقعہ پاکستانی ٹیم کی ویسٹ انڈیز کے خلاف سیریز کے دوران پیش آیا تھا۔

Advertisement

x

We use cookies to give you the best online experience. By agreeing you accept the use of cookies in accordance with our cookie policy.

I accept I decline Privacy Center Privacy Settings