Advertisement

نوکریاں ہی نوکریاں۔۔ وزیر صحت پنجاب نے انتہائی شاندار اعلان کر دیا

Advertisements

وزیر صحت پنجاب پروفیسر ڈاکٹر یاسمین راشد نے صوبہ بھر کے ہسپتالوں میں تمام خالی اسامیوں پر فوری طور پر بھرتی کی منظوری دے دی ہے۔ ان میں میڈیکل آفیسرز، نرسز اور گریڈ ایک سے 15تک کی اسامیاں شامل ہیں۔ وزیر صحت کی زیرصدارت ایک اعلیٰ سطحی اجلاس کو بتایا گیا کہ پنجاب پبلک سروس کمیشن نے 6891ڈاکٹروں کی بھرتی کا عمل مکمل کرلیا ہے۔ان میں 2967ویمن میڈیکل آفیسرز اور 3924میڈیکل آفیسرز شامل ہیں۔ان ڈاکٹرز کی اکتوبر کے پہلے ہفتے

میں آن لائن پریفرنس سسٹم کے تحت متعلقہ مقام پر تعیناتی کردی جائے گی۔ اجلاس کو بتایا گیا کہ اس وقت صوبہ بھر میں ڈاکٹروں کی 10763اسامیاں خالی ہیں تاہم ان میں سے بعض پوسٹوں پر ایڈہاک بنیادوں پر ڈاکٹر کام کررہے ہیں۔باقیماندہ 3ہزار872اسامیوں پر بھرتی کیلئے اکتوبر میں پنجاب پبلک سروس کمیشن کو ریکوزیشن بھجوا دی جائے گی۔پبلک سروس کمیشن کے ذریعے بھرتی کے بعد نئے ڈاکٹر ایڈہاک ڈاکٹرز کی جگہ لے لیں گے ۔ ایڈہاک ڈاکٹرز بھی پبلک سروس کمیشن سے مستقل تعیناتی کیلئے رجوع کرسکتے ہیں۔ وزیر صحت نے ہدایت کی کہ پبلک سروس کمیشن سے رابطہ کرکے محکمہ صحت کیلئے بھرتیوں کا عمل ترجیحی بنیادوں پر مکمل کرنے کی درخواست کی جائے۔ ڈاکٹر یاسمین راشد نے کہا کہ وزیراعلیٰ سردار عثمان بزدار نے خصوصی طور پر محکمہ صحت میںمیرٹ پر بھرتیوں کی اجازت دی ہے کیونکہ صحت عامہ کے شعبے میں اہداف ہر صورت میں حاصل کئے جائیں گے۔انہوں نے کہا کہ اضلاع کے ہسپتالوں میں گریڈ ایک سے 15تک 19ہزار 866تک خالی اسامیوں پر بھی ٹیسٹنگ سروس کے ذریعے بھرتیاں کی جائیں گی اور ضلعی ہیلتھ اتھارٹیز کو انٹرویو اور سلیکشن کا مکمل اختیار ہوگا۔انہوں نے کہا کہ پبلک سروس کمیشن نے 2ہزار834 نرسوں کی بھرتی کا عمل بھی مکمل کرلیا ہے۔ ان نرسوں کی بھی جلد تعیناتی کردی جائے گی۔ مزیدبرآں 1919نرسوں کی بھرتی کیلئے ریکوزیشن اکتوبر میں بھجوائی جارہی ہے۔ وزیرصحت نے سختی سے ہدایت کی کسی بھی جگہ پر میرٹ اور شفافیت کو نظرانداز نہ کیا جائے۔

وزیر صحت پنجاب پروفیسر ڈاکٹر یاسمین راشد نے صوبہ بھر کے ہسپتالوں میں تمام خالی اسامیوں پر فوری طور پر بھرتی کی منظوری دے دی ہے۔ ان میں میڈیکل آفیسرز، نرسز اور گریڈ ایک سے 15تک کی اسامیاں شامل ہیں۔ وزیر صحت کی زیرصدارت ایک اعلیٰ سطحی اجلاس کو بتایا گیا کہ پنجاب پبلک سروس کمیشن نے 6891ڈاکٹروں کی بھرتی کا عمل مکمل کرلیا ہے۔ان میں 2967ویمن میڈیکل آفیسرز اور 3924میڈیکل آفیسرز شامل ہیں۔ان ڈاکٹرز کی اکتوبر کے پہلے ہفتے میں آن لائن پریفرنس سسٹم کے تحت متعلقہ مقام پر تعیناتی کردی جائے گی۔ اجلاس کو بتایا گیا کہ اس وقت صوبہ بھر میں ڈاکٹروں کی 10763اسامیاں خالی ہیں تاہم ان میں سے بعض پوسٹوں پر ایڈہاک بنیادوں پر ڈاکٹر کام کررہے ہیں۔باقیماندہ 3ہزار872اسامیوں پر بھرتی کیلئے اکتوبر میں پنجاب پبلک سروس کمیشن کو ریکوزیشن بھجوا دی جائے گی۔پبلک سروس کمیشن کے ذریعے بھرتی کے بعد نئے ڈاکٹر ایڈہاک ڈاکٹرز کی جگہ لے لیں گے ۔ ایڈہاک ڈاکٹرز بھی پبلک سروس کمیشن سے مستقل تعیناتی کیلئے رجوع کرسکتے ہیں۔ وزیر صحت نے ہدایت کی کہ پبلک سروس کمیشن سے رابطہ کرکے محکمہ صحت کیلئے بھرتیوں کا عمل ترجیحی بنیادوں پر مکمل کرنے کی درخواست کی جائے۔ ڈاکٹر یاسمین راشد نے کہا کہ وزیراعلیٰ سردار عثمان بزدار نے خصوصی طور پر محکمہ صحت میںمیرٹ پر بھرتیوں کی اجازت دی ہے کیونکہ صحت عامہ کے شعبے میں اہداف ہر صورت میں حاصل کئے جائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ اضلاع کے ہسپتالوں میں گریڈ ایک سے 15تک 19ہزار 866تک خالی اسامیوں پر بھی ٹیسٹنگ سروس کے ذریعے بھرتیاں کی جائیں گی اور ضلعی ہیلتھ اتھارٹیز کو انٹرویو اور سلیکشن کا مکمل اختیار ہوگا۔انہوں نے کہا کہ پبلک سروس کمیشن نے 2ہزار834 نرسوں کی بھرتی کا عمل بھی مکمل کرلیا ہے۔ ان نرسوں کی بھی جلد تعیناتی کردی جائے گی۔ مزیدبرآں 1919نرسوں کی بھرتی کیلئے ریکوزیشن اکتوبر میں بھجوائی جارہی ہے۔ وزیرصحت نے سختی سے ہدایت کی کسی بھی جگہ پر میرٹ اور شفافیت کو نظرانداز نہ کیا جائے۔

Advertisement

x

We use cookies to give you the best online experience. By agreeing you accept the use of cookies in accordance with our cookie policy.

I accept I decline Privacy Center Privacy Settings