Advertisement

محنت کش کی گونگی، بہری بیٹی سے بااثر افراد کی اجتماعی زیادتی، کار سوار پھینک کر فرار ہوگئے

Advertisements

قصور کے نواح میں مزدوری کرکے اپنا اور اپنی بیٹی کا پیٹ پالنے والے والدین کی نابالغ گونگی بہری بیٹی کو کار سوار امیر زادے اغواءکرکے لے گئے اور اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنانے کے بعد یتیم خانہ چوک لاہور کے علاقہ میں پھینک کر فرار ہوگئے۔

روزنامہ خبریں کے مطابق موضع شمس آباد کے محنت کش غلام رسول نے بتایا کہ وہ انتہائی غریب لوگ ہیں، وہ اور اس کی بیوی روزانہ محنت مزدوری کرنے کے لئے شہر جاتے ہیں اور انہی پیسوں سے گھر کا چولہا جلتا ہے، وقوعہ کے روز بھی غلام رسول اور اس کی بیوی مزدوری کرنے کے لئے گئے ہوئے تھے اور اس کی 15 سالہ بیٹی گھر میں اکیلی تھی۔اس دوران بھوک لگنے پر گونگی بہری (ر) قریبی تندور سے روٹی لے کر واپس گھر کی طرف آرہی تھی کہ کار میں سوار تین ملزمان نے اس کی بیٹی کو زبردستی کھینچ کر کار میں ڈال لیا اور نامعلوم مقام پر لیجاکر باری باری لڑکی سے زیادتی کرتے رہے۔ خون میں لت پت لڑکی بیہوش ہوگئی، رات گئے جب وہ اپنی بیٹی کو ہر طرف تلاش کرکے تک چکے تھے کہ انہیں یتیم خانہ چوک لاہور سے ٹیلی فون کال آئی کہ ایک بیہوش لڑکی انہیں ملی ہے جس نے ہوش میں آنے کے بعد اپنے گھر کا ایڈریس بتایا ہے، درد دل رکھنے والے مذکورہ افرا دکی اطلاع پر بوڑھے والدین موقع پر پہنچے او رلڑکی کو لے کر پولیس کے ہاں پیش ہوگئے۔

غلام رسول کے مطابق پولیس نے اپنی مرضی کی دفعات کے تحت ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کرلیا۔ ملزمان کی شناخت ہوچکی ہے مگر کئی روز گزرجانے کے باوجود پولیس اس لئے ملزمان کو گرفتا رنہیں کررہی کہ وہ انتہائی بااثر اور امید آدمی ہیں۔ علاقہ کے لوگوں نے بتایا کہ پولیس ملزمان کی سرپرستی کررہی ہے۔ دوسری طرف بچی کے ساتھ ہونے والی اجتماعی زیادتی کے اس واقعہ نے غلام رسول اور اس کے رشتہ داروں کو غم سے نڈھال کردیاہے، علاقہ کے لوگوں نے چیف جسٹس آف پاکستان اور آرمی چیف سے مطالبہ کیا ہے کہ ملزمان کی گرفتاری یقینی بنا کر انہیں قرار واقعی سزا دی جائے۔

Advertisement

Source Dailypakistan.com.pk
x

We use cookies to give you the best online experience. By agreeing you accept the use of cookies in accordance with our cookie policy.

I accept I decline Privacy Center Privacy Settings