Advertisement

شہبازشریف، نوازشریف کی کس دھمکی کے بعد پاکستان واپس آنے پر مجبور ہوئے؟سینئر صحافی چوہدری غلام حسین نے تہلکہ خیز دعویٰ کردیا

Advertisements

نواز شریف کی دھمکی کے بعد شہباز شریف وطن واپس آئے ہیں۔ سینئر صحافی چوہدری غلام حسین کا دعویٰ ،نجی ٹی وی پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے چوہدری غلام حسین نے کہا کہ شہباز شریف کا لندن میں سیر کرنے کے علاوہ کوئی کام نہ تھا۔ وہ ہیٹ پہن کر مختلف لوگوں سے ملتے، صحافیوں سے پہلو بچا کر نکل جاتے، ان کا مقصد لندن کے موسم انجوائے کرنا اور ٹیسٹوں کے بہانے وہیں رہنا تھا۔ مریم نواز نے نواز شریفکی شہباز شریف کے ساتھ بات کرائی ۔ ’’نواز شریف نے کہا شہباز صاحب آپ پہلی دستیاب

فلائٹ پکڑیں اور پاکستان پہنچیں ، اگر آپ نہیں آتے تو نہ میں آپ کو پارٹی میں قبول کروں گا اور نہ ہی خاندان میں‘‘ جس کے بعد وہ واپس پاکستان آئے ۔ شہباز شریف اب بھی بہانہ بنا کر نکل جائیں گے کیونکہ وہ لندن سے واپس آنے کیلئے تیار نہیں تھے۔واضح رہے کہ وزیر ریلوے شیخ رشید نے بھی دعویٰ کیا تھا کہ شہبازشریف بجٹ اجلاس کے بعد واپس لندن چلے جائینگے۔

اپوزیشن لیڈرپنجاب اسمبلی حمزہ شہبازکوضمانت مسترد ہونے کے بعدنیب نے گرفتار کرلیا،اس موقع پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے حمزہ شہباز نے کہا کہ میرے لیے یہ جیلیں نئی نہیں ہیں۔میں نے کوئی کرپشن نہیں کی۔ کرپشن کا ثبوت لے کر آئیں سیاست چھوڑ دوں گا۔ آصف زرداری کی گرفتاری سے متعلق فردوس عاشق اعوان نے پہلے ہی بتا دیا تھا جب کہ میری گرفتاری کا چیئرمین نیب پہلے بھی کہہ چکے تھے ،یاد رہے کہ لاہور ہائیکورٹکے 2 رکنی بینچ نے حمزہ شہباز کیخلاف کیس کی سماعت کی تو نیب کےایڈیشنل پراسیکیوٹر جنرل جہانزیب بھروانہ نے

مؤقف اپنایا کہ حمزہ شہباز کے اثاثے آمدن سے مطابقت نہیں رکھتے، حمزہ اور ان کی فیملی نے منی لانڈرنگ کی۔عدالت نے نیب کے ایڈیشنل پراسیکیوٹر کے دلائل سننے کے بعد حمزہ شہباز کی عبوری ضمانت میں مزید توسیع کی درخواست مسترد کردی۔دورانِ سماعت نیب کی ایک ٹیم عدالت میں موجود تھی جس نے لیگی رہنما کو حراست میں لے لیا۔

Advertisement

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More

x

We use cookies to give you the best online experience. By agreeing you accept the use of cookies in accordance with our cookie policy.

I accept I decline Privacy Center Privacy Settings