Advertisement

رات پچھلے پر جب علامہ اقبال نے مجھے کہا کہ مہمان کے لئے لسی لے کر آؤ

Advertisements

جیسا کہ ہم نے بہت بار اپنے بزرگوں سے بڑوں سے یہ سنا ہے کہ پاکستان الله کے رازوں میں سے ایک راز ہے اسے آج تک کوئی نہ جان سکا .علامہ اقبال کے نام سے تو آپ سب واقف ہوں گے آپ کے پاس ایک نوکر تھا جو آپ کے کام کاج کرتا تھا اس کا نام تھا الہی بخش . الہی بخش نے یہ بات علامہ محمّد اقبال کی وفات کے بعد بتائی اور نواے وقت اخبار میں بھی یہ بات کئی بار چھپ چکی ہے .

الہی بخش بتاتے ہیں کہ ایک رات میں نے دیکھا کہ رات بہت ہو گئی ہے لکین ابھی تک علامہ محمّد اقبال صاحب سوئے نہیں اتنے میں باہر دروازے پر دستک ہوئی میں نے جا کر دروازہ کھولا تو دیکھتا کیا ہوں ایک اونچے قد کے بڑے وجی الانسان بزگ کھڑے ہیں علامہ اقبال نے ان کا استقبال کیا اور اندر بلا لیا . اور عرض کی کہ حضور آپ کیا لینا پسند کریں گے بزرگ نے فرمایا میں لسی پیوں گا . اقبال نے میری طرف دیکھا اور اشارہ کیا کہ لسی لے کر آؤ میں نے دل ہی دل میں یہ سوچا کہ یہ کیا ہو گیاہے ڈاکٹر صاب کو بھلا اتنی رات کو بھی کہیں سے لسی ملے گی لکین کیا کرتا ڈاکٹر صاحب کا حکم تھا بھر بازار میں گیا تو ایک دکان کھلی تھی اور میری خوش قسمتی کہ وہاں ایک بزرگ لسی بنا رہے تحت انہوں نےمجھ سے پوچھا کہ لسی لینے آئے ہو میں نے عرض کی جی ہاں لسی لینے آیا ہوں انہوں نے مجے لسی دی اور میں نے لا کر پیش کر دی. بزرگ جو مہمان آئے تھے انہوں نے اقبال سے کچھ دیر باتیں کیں اور چلے گئے . میں نے اقبال سے پوچھا کہ اقبال یہ کون تھے اقبال نے اپنی انگلی ہونٹ پر رکھ لی اور کہا کہ دوبارہ نہیں پوچھنا یہ سوال مج سےمیں نے کہاں کہ اقبال ایسا نہیں چلے گا آپ کو بتانا پڑے گا اتنا عرصہ ہو گیا مجھے کی خدمت کرتے ہوئے اب کیا میں آپ سے کوئی بات بھی نہیں پوچھ سکتا . اقبال نے کہا کہ ٹھیک ہے لکین وعدہ کرو کہ یہ بات تم میری زندگی میں کسی کو نہیں بتاؤ گے میں نے کہا کہ ٹھیک ہے نہیں بتاؤں گا تب اقبال نے مجھے بتایا کہ یہ جو بزرگ ہمارے گھر آئے تھے وہ خواجہ غربب نواز تھے اور جن کو آپ نے باہر دیکھا ہے وو داتا علی ہجویری تھے اور مجھے یہ کہنے آئے تھے کہ پاکستان بنانا ہ الله کہ رسولﷺ یہ چاہتے ہیں کہ پاکستان بنے .

آپ کو یاد ہو گا کہ قاعدازم محمّد علی جناح برصغیر سے انگلستان جا چکے تھے اس واقے کے بعد علامہ اقبال انگلستان گئے اور جا کر محمّد علی جناح کو کہا کہ آپ واپس برصغیر چلیں ہم نے پاکستان بنانا ہے قائد ازم محمّد علی جناح نے کہا کہ ہم پاکستان کس طرح بنائیں گے ہمارے پاس کچھ نہیں سب ہمارے خلاف ہیں تب علامہ محمّد اقبال نے کہا آپ فکر نہ کریں پاکستان ہر صورت بنے گا آپ بس واپس چلیں علامہ محمّد اقبال نے بتایا کہ الله اور اس کے حبیبﷺ چاہتے ہیں کے پاکستان بنے پھر واپس آ کر قائد ازم مئی دوبارہ جدوجہد شروع کیا اور پاکستان بنایا . پاکستان بنانے میں بے شمار قربانیاں دی گئیں بڑی مشکل سے ہم نے یہ پاکستان حاصل کیا ہم پر فرض نہیں بلکے قرض ہ کہ ہم اس ملک کی حفاظت کریں اس ملک سے پیار کریں .

Advertisement

x

We use cookies to give you the best online experience. By agreeing you accept the use of cookies in accordance with our cookie policy.

I accept I decline Privacy Center Privacy Settings