Advertisement

حسن علی کو لگاتار تین چھکے مارنے والے اسلام آباد یونائیٹڈ کے کھلاڑی آصف علی نے ایسی بات کہہ دی کہ آپ بھی ان کے مداح ہو جائیں گے

Advertisements

”کوچنگ سٹاف بولتا ہے کہ تھوڑا وقت لو اور پھر بڑے شارٹس لگاﺅ لیکن میں۔۔۔“حسن علی کو لگاتار تین چھکے مارنے والے اسلام آباد یونائیٹڈ کے کھلاڑی آصف علی نے ایسی بات کہہ دی کہ آپ بھی ان کے مداح ہو جائیں گے پاکستان سپر لیگ کے فائنل میچ میں پشاور زلمی کے حسن علی کو لگا تار تین چھکے مارنے والے اسلام آباد یونائیٹڈ کے ایمرجنگ کھلاڑی آصف علی نے کہا ہے کہ تیز کھیلنا ہی میری .نیچرل گیم ہے اس لیے مجھے ایسے کھیلنے میں زیادہ مزہ آتا ہے

۔میچ کے بعد رمیض راجہ سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے بتا یا کہ میرا کوچنگ سٹاف کہتا ہے کہ تھوڑا وقت لینے کے بعد بڑی شارٹس لگا یا کرو لیکن میں میری نیچرل گیم تیز کھیلنا ہے اور میں پہلی گیند سے ہی تیز کھیلتا ہوں کیونکہ سنگل لینے سے اتنا اعتماد نہیں آتا جتنا اعتماد بڑی شارٹ مار کر حاصل ہوتا ہے ۔ان کاکہنا تھا کہ مجھے خود پر یقین ہے ،اگر میں گھبرا کر کھیلتا تو پہلی گیند پر ہی بڑی شار ٹ لگانے کی کوشش نہ کرتا ۔آصف علی نے کہا کہ مجھے سب کہتے ہیں کہ توبڑے میچ کا کھلاڑی ہے اور مجھے بھی پریشر لے کر مزہ آتا ہے ۔ ۔میچ کے بعد رمیض راجہ سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے بتا یا کہ میرا کوچنگ سٹاف کہتا ہے کہ تھوڑا وقت لینے کے بعد بڑی شارٹس لگا یا کرو لیکن میں میری نیچرل گیم تیز کھیلنا ہے اور میں پہلی گیند سے ہی تیز کھیلتا ہوں کیونکہ سنگل لینے سے اتنا اعتماد نہیں آتا جتنا اعتماد بڑی شارٹ مار کر حاصل ہوتا ہے ۔ان کاکہنا تھا کہ مجھے خود پر یقین ہے ،اگر میں گھبرا کر کھیلتا تو پہلی گیند پر ہی بڑی شار ٹ لگانے کی کوشش نہ کرتا ۔آصف علی نے کہا کہ مجھے سب کہتے ہیں کہ توبڑے میچ کا کھلاڑی ہے اور مجھے بھی پریشر لے کر مزہ آتا ہے ۔

۔میچ کے بعد رمیض راجہ سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے بتا یا کہ میرا کوچنگ سٹاف کہتا ہے کہ تھوڑا وقت لینے کے بعد بڑی شارٹس لگا یا کرو لیکن میں میری نیچرل گیم تیز کھیلنا ہے اور میں پہلی گیند سے ہی تیز کھیلتا ہوں کیونکہ سنگل لینے سے اتنا اعتماد نہیں آتا جتنا اعتماد بڑی شارٹ مار کر حاصل ہوتا ہے ۔ان کاکہنا تھا کہ مجھے خود پر یقین ہے ،اگر میں گھبرا کر کھیلتا تو پہلی گیند پر ہی بڑی شار ٹ لگانے کی کوشش نہ کرتا ۔آصف علی نے کہا کہ مجھے سب کہتے ہیں کہ توبڑے میچ کا کھلاڑی ہے اور مجھے بھی پریشر لے کر مزہ آتا ہے ۔ ۔میچ کے بعد رمیض راجہ سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے بتا یا کہ میرا کوچنگ سٹاف کہتا ہے کہ تھوڑا وقت لینے کے بعد بڑی شارٹس لگا یا کرو لیکن میں میری نیچرل گیم تیز کھیلنا ہے اور میں پہلی گیند سے ہی تیز کھیلتا ہوں کیونکہ سنگل لینے سے اتنا اعتماد نہیں آتا جتنا اعتماد بڑی شارٹ مار کر حاصل ہوتا ہے ۔ان کاکہنا تھا کہ مجھے خود پر یقین ہے ،اگر میں گھبرا کر کھیلتا تو پہلی گیند پر ہی بڑی شار ٹ لگانے کی کوشش نہ کرتا ۔آصف علی نے کہا کہ مجھے سب کہتے ہیں کہ توبڑے میچ کا کھلاڑی ہے اور مجھے بھی پریشر لے کر مزہ آتا ہے ۔

Advertisement

Source DailyPakistan.com.pk