Advertisement

جنوبی افریقہ سے مسلسل 2میچ ہارنے کے بعد کامیابی کیسے ملی؟ قومی ٹیم کے نئے کپتان شعیب ملک نے جیت کا راز بتا دیا

Advertisements

پاکستانی ٹیم کے کپتان شعیب ملک نے چوتھے میچ میں جنوبی افریقہ کے خلاف کامیابی پر خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ ملک کی نمائندگی اور کپتانی یقینا بڑا اعزاز ہے ۔ میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے شعیب ملک نے کہاکہ ملک کی نمایندگی اور کپتانی یقینا بڑا اعزاز ہے۔شعیب ملک نے کہا کہ پنک ڈے میچ میں مزہ آیا ، عظیم مقصد کیلئے یہ میچ ہوا۔شعیب ملک نے کہاکہ بہترین ماحول تھا ، بہت مزہ آیا ۔انہوں نے کہاکہ اٹیک کا پلان کیا ، ابتدا ہی میں 2 وکٹیں ملیں ۔

’’پاکستان بمقابلہ جنوبی افریقہ ‘‘قومی ہیرو عثمان شنواری نے سٹیڈیم میں دوران میچ ایسا کام کر دیا کہ پوری دنیا میں دھوم مچ گئی ۔۔۔ جنوبی افریقا نے چوتھے ایک روزہ میچ میں پاکستان کو جیت کے لیے 165 رنز کا ہدف دیا ہے۔ جوہانسبرگ میں کھیلے جارہے میچ میں میزبان جنوبی افریقا نے پاکستان کی دعوت پر پہلے بیٹنگ کی تو

ابتدا میں مایوس کن آغاز کے بعد کپتان فاف ڈپلوسی اور ہاشم آملہ کے درمیان 101 رنز کی شراکت کے بعد پوری بیٹنگ لائن ریت کی دیوار ثابت ہوئی۔ شاہین شاہ آفریدی نے زبردست بولنگ کرتے ہوئے 3 کے مجموعی اسکور پر کوئنٹن ڈی کوک کو ایل بی ڈبلیو آؤٹ کیا جس کے بعد 18 کے مجموعے پر ریزا ہینڈرکس بھی 2 رنز بنا کر شاہین شاہ کا شکار بنے۔ کپتان فاف ڈوپلیسی اور ہاشم آملہ نے تیسری وکٹ پر محتاط انداز اپناتے ہوئے اسکور کو آگے بڑھایا اور 101 رنز کی شراکت قائم کی اور دونوں بلے باز نصف سنچریاں بنانے میں کامیاب رہے۔ فاف ڈوپلیسی 57 اور ہاشم آملہ 59 رنز بنانے کے بعد آؤٹ ہوئے تو میزبان ٹیم کی بیٹنگ لائن ریت کی دیوار ثابت ہوئی اور کھلاڑیوں کی لائن لگ گئی، ڈیوڈ ملر کی اننگز 4 رنز تک محدود رہی اور 156 کے مجموعی اسکور پر عثمان شنواری نے اپنے ایک ہی اوور میں تین بلے بازوں کو پویلین کی راہ دکھائی۔ پاکستان کی جانب سے عثمان شنواری نے 4، شاہین شاہ آفریدی 2، محمد عامر، عماد وسیم اور شاداب خان نے ایک ایک وکٹ حاصل کی۔ یاد رہے کہ آئی سی سی کی جانب سے نسلی پرستانہ جملوں پر کارروائی کرتے ہوئے کپتان سرفراز احمد

پر 4 میچز کی پابندی عائد کردی گئی ہے جس کے باعث شعیب ملک ٹیم کی قیادت کر رہے ہیں۔ سرفراز احمد کی جگہ ٹیم میں محمد رضوان کو شامل کیا گیا ہے جب کہ حسن علی کی جگہ عثمان خان شنواری گیارہ رکنی ٹیم کا حصہ ہیں۔ سیریز میں میزبان جنوبی افریقا کو 1-2 کی برتری حاصل ہے اور سیریز میں رہنے کے لیے قومی ٹیم کو آج کا میچ لازمی جیتا ہوگا، میزبان ٹیم کی کامیابی کی صورت میں سیریز جنوبی افریقا کے نام ہوجائے گی، اس لیے قومی ٹیم کے پاس غلطی کی کوئی گنجائش نہیں۔

Advertisement

x

We use cookies to give you the best online experience. By agreeing you accept the use of cookies in accordance with our cookie policy.

I accept I decline Privacy Center Privacy Settings