Advertisement

’تم نے اپنا وقت گزارلیا، اب میں شادی کر کے۔۔۔‘ دلہن نے شادی کے موقع پر شوہر کی سابقہ گرل فرینڈ کو خط لکھ دیا، ایسی بات کہہ دی کہ ہنگامہ برپاہوگیا، لوگ شوہرکو بھاگنے کے مشورے دینے لگے کیونکہ۔۔۔

Advertisements

محبت میں رقابت کا احساس دل توجلاتا ہی ہے، اب ایک ایسی ہی دل جلی لڑکی نے اپنے ہونے والے شوہر کی سابق گرل فرینڈ کے نام ایسا کھلا خط لکھ ڈالا ہے کہ انٹرنیٹ پر ہنگامہ برپا ہو گیا۔میل آن لائن کے مطابق اس خط کا عنوان لڑکی نے یہ دیا ہے کہ ”تم اس کے ساتھ سکول میں ڈانس کا لباس پہن چکی ہو لیکن میں شادی کا لباس پہننے جا رہی ہوں۔“متن میں اس نے لکھا ہے کہ ”جب میں سوچتی ہوں کہ تم میرے منگیتر کی گرل فرینڈ رہ چکی ہو تو مجھے حسد کا شدید احساس ہوتا ہے لیکن میں خوش ہوں کہ تم اس کے لیے بنی ہی نہیں تھیں، وہ صرف میرا تھا اور اب ہمیشہ کے لیے میرا ہونے جا رہا ہے۔

تم شاید سکول کے ڈانس مقابلے کے لیے اپنا لباس اس کے کوٹ کے رنگ کی مناسبت سے بنواتی رہی ہو لیکن شادی کا جوڑا اس کے کوٹ کے رنگ کے مطابق میں بنوا رہی ہوں۔ یہ تو تم نے بھی سوچ رکھا ہو گا کہ تم اس کے ساتھ تمام زندگی گزارو گی لیکن تم اس قابل نہیں تھیں۔ جب تم سکول ڈانس میں زرق برق لباس پہن کر آتی تھیں تو شاید وہ تمہاری تعریف بھی کرتا ہو گا لیکن تمہیں معلوم ہونا چاہیے کہ درحقیقت وہ تعریف تمہاری نہیں بلکہ ڈانس والے لباس کی ہوتی تھی، کیونکہ وہ لباس ہوتے ہی خوبصورت ہیں اور ہر کسی پر جچتے ہیں۔ اس نے تمہیں شاید پھولوں کا گجرا پہنایا ہو لیکن مجھے وہ شادی کی انگوٹھی پہنانے جا رہا ہے۔تم نے اس کے ساتھ اپنا وقت گزار لیا، اب میں شادی کرکے پوری زندگی اس کے ساتھ گزارنے جا رہی ہوں۔“رپورٹ کے مطابق لڑکی کے اس خط نے انٹرنیٹ پر ہلچل مچارکھی ہے اور صارفین کی اکثریت اس کے خیالات کو خطرناک اور خوفزدہ کر دینے والے قرار دے رہی ہے۔ ایک شخص نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر لکھا ہے کہ ”کوئی شخص بقائمی ہوش و حواس اس طرح کی تحریر کیسے لکھ سکتا ہے؟“ فیڈرا ہیس نامی خاتون نے لکھا ہے کہ ”یہ تحریر اس قدر احمقانہ ہے کہ میرے لیے اسے مکمل پڑھنا بھی مشکل ہو گیا۔“لوری لائف نامی لڑکی نے کہا کہ ”

اس لڑکی کے خیالات سے لگتا ہے کہ اس کے ہونے والے شوہر کو شادی کے بعد زندگی کے لالے پڑنے والے ہیں۔“ایڈ زیٹرون نامی صارف نے لکھا کہ ”اس لڑکی نے اب تو یہ لکھا ہے کہ میں شادی کا لباس پہننے جا رہی ہوں لیکن مجھے ڈر ہے ، اگلی پوسٹ میں کہیں یہ نہ لکھ دے کہ میں اس کی لڑکے کی جلد اتار کر اس کا لباس پہننے جا رہی ہوں۔“

Advertisement

Source Dailypakistan.com.pk
x

We use cookies to give you the best online experience. By agreeing you accept the use of cookies in accordance with our cookie policy.

I accept I decline Privacy Center Privacy Settings