Advertisement

تحریک انصاف کی حکومت اور وزیراعظم عمران خان کو نیا چیلنج، خادم حسین رضوی پھر میدان میں، ملک بھر میں دھرنے دینے کا اعلان کردیا گیا

Advertisements

تحریک لبیک نے ایک بار پھر عمران خان کی حکومت کو نیا چیلنج دے دیا ہے اور دھمکی دیتے ہوئے کہا ہے کہ سپریم کورٹ کی جانب سے توہین رسالت کیس میں سزا یافتہ آسیہ بی بی کو اگر رہا کیا گیا تو پورے ملک میں احتجاجی مظاہرے کریں گے اور اگر ضرورت محسوس ہوئی تو عدالت کے باہر دھرنا بھی دیں گے، خادم حسین رضوی نے جج صاحبان کو توہین رسالت قانون اور ٹی وی پر اس کی خلاف ورزی پر مباحثے کی بھی دعوت دے دی۔ واضح رہے کہ آسیہ بی بی کی ممکنہ رہائی کے خلاف

حضرت داتا علی ہجویریؒ کے مزار سے چیئرنگ کراس تک نکالی جانے والی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے تحریک لبیک کے اعجاز قادری کا کہنا تھا کہ آسیہ بی بی کا جرم کسی سے ڈھکا چھپا نہیں، سیشن کورٹ اور لاہور ہائی کورٹ نے آسیہ بی بی کو مجرم قرار دیا ہے، اگر سپریم کورٹ نے اس سزا کو ختم کیا تو یہ قانون ناموس رسالت اور آئین پاکستان پر حملہ تصور کیا جائے گا، اگر آسیہ بی بی کو رہا کیا گیا تو ملک بھر میں احتجاج کا ایسا سلسلہ شروع کیا جائے گا جو سزا ختم کرنے سے متعلق فیصلے کے خاتمے تک جاری رہے گا، اس دوران امن وامان کی ذمہ دار حکومت وقت ہوگی۔یاد رہے کہ چیف جسٹس آف پاکستان کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے 8 اکتوبر2018ء کو آسیہ بی بی کی رہائی یا بریت سے متعلق فیصلہ محفوظ کیا تھا

اور میڈیا کو اس مقدمے سے متعلق تبصروں سے منع کر دیا تھا۔ تحریک لبیک نے کہا ہے کہ سپریم کورٹ کی جانب سے توہین رسالت کیس میں سزا یافتہ آسیہ بی بی کو اگر رہا کیا گیا تو پورے ملک میں احتجاجی مظاہرے کریں گے اور اگر ضرورت محسوس ہوئی تو عدالت کے باہر دھرنا بھی دیں گے، خادم حسین رضوی نے جج صاحبان کو توہین رسالت قانون اور ٹی وی پر اس کی خلاف ورزی پر مباحثے کی بھی دعوت دے دی۔

Advertisement

x

We use cookies to give you the best online experience. By agreeing you accept the use of cookies in accordance with our cookie policy.

I accept I decline Privacy Center Privacy Settings