Advertisement

آپ نیب سے استعفیٰ دے دیں۔۔کچھ عرصے بعد آپ کو صدر پاکستان بنا دیا جائے گا چیئر مین نیب کو بڑی پیشکش، جانتے ہیں آفر کرنیوالا کون نکلا۔۔۔

Advertisements

معروف صحافی اور کالم نگار جاوید چودھری نے اپنے حالیہ کالم میں چئیرمین نیب جسٹس (ر) جاوید اقبال سے ہونے والی ملاقات کا احوال بتا دیا۔ اپنے کالم میں جاوید چودھری نے بتایا کہ چیئرمین نیب جسٹس(ر) جاوید اقبال نے حیران کُن انکشاف کرتے ہوئے مجھے بتایا کہ مجھے میرے ایک عزیز کے ذریعے پیشکش کی گئی کہ آپ نیب سے استعفیٰ دے دیں۔

آپ کوسینیٹر بنا دیا جائے گا اور آپ پھر کچھ عرصے بعد صدر پاکستان بن جائیں گے۔میں نے پوچھا کہ آپ کو یہ آفر کس نے دی اور کب دی؟ جس پر وہ مسکرا کر بولے کہ یہ میں آپ کو چند دن بعد بتاؤں گا۔ میں نے اصرار کیا تو ان کا جواب تھا کہ یہ پچھلی حکومت کے آخری فیز میں ہوئی تھی۔ میں نے پوچھا کہ کیا یہ واحد پیشکش تھی؟ جس پر وہ بولے نہیں، مجھے اس سے پہلے بھی ایک پیشکش ہوئی تھی،مجھے کہا گیا تھا آپ مستعفی ہو جائیں،آپ دنیا میں جہاں کہیں گے آپ کو وہاں سیٹ کر دیا جائے گا۔

میں نے پوچھا کہ لیکن آپ کے استعفے سے کسی کو کیا فائدہ ہوتا؟جس پر انہوں نے جواب دیا کہ میں اگر مستعفی ہو جاتا تو چیئرمین نیب کی کرسی خالی ہو جاتی‘الیکشن سے پہلے پاکستان پیپلز پارٹی اور ن لیگ کے درمیان شدید اختلافات تھے۔ونوں میں نئے چیئرمین کے لیے اتفاق رائے نہ ہوپاتا اور یوں آج کے بے شمارمجرموں کے خلاف انکوائریاں رک جاتیں۔ میں نے پوچھا کہ آپ کا کیا جواب تھا؟ جس پر وہ ہنس کر بولے کہ جواب واضح تھا، میاں نواز شریف اس وقت جیل میں ہیں اور میں آج بھی چیئرمین کی کرسی پر بیٹھا ہوں۔

دباؤ سے متعلق سوال کے جواب میں چئیرمین نیب نے کہا کہ ہاں ہے۔ اپوزیشن اور حکومت دونوں ناراض ہیں۔آپ کواگلے چند دنوں میں نیب کے خلاف ن لیگ،پیپلز پارٹی اور پاکستان تحریک انصاف تینوں ایک پیج پر دکھائی دیں گی۔ میں نے پوچھا کہ کیا آپ سب کا دباؤ برداشت کر لیں گے؟ جس پر انہوں نے جواب دیا کہ میرے پاس کھونے کے لیے کچھ نہیں ہے۔ میں ملک کے لیے اپنا کردار ادا کر رہا ہوں اور میں آخری سانس تک کرتا رہوں گا۔

Advertisement

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More

x

We use cookies to give you the best online experience. By agreeing you accept the use of cookies in accordance with our cookie policy.

I accept I decline Privacy Center Privacy Settings